اے ڈی بلدیات ترقیاتی منصوبوں پر ٹیکس وصول کرتا ہے، شگفتہ ملک

اے ڈی بلدیات ترقیاتی منصوبوں پر ٹیکس وصول کرتا ہے، شگفتہ ملک

پشاور ( نیوز رپورٹر ) خیبرپختونخوااسمبلی میں وقفہ سوالات کے دوران وزراکے تسلی بخش جوابات خیبرپختونخوااسمبلی میں وقفہ سوالات کے دوران اے این پی کی رکن شگفتہ ملک نے سوال کیاکہ اسسٹنٹ ڈائریکٹربلدیات ترقیاتی منصوبوں میں ٹیکس کی مد میں رقوم وصول کرتاہے جواب دیتے ہوئے معاون خصوصی برائے اطلاعات کامران بنگش نے کہاکہ دفتراسسٹنٹ ڈائریکٹرمحکمہ بلدیات پشاورترقیاتی منصوبوں میں ٹیکس کی مد میں کوئی کٹوتی براہ راست نہیں کرتا دفتراسسٹنٹ ڈائریکٹر بلدیات پشاور ترقیاتی منصوبوں کی ادائیگی کے وقت دفتر اکاؤٹنٹ جنرل صوبہ خیبرپختونخواکوفائل ارسال کرتاہے رائج شدہ ٹیکس کی کٹوتی دفتراکاؤنٹنٹ جنرل صوبہ خیبرپختونخوا براہ راست کرتاہے دفتر اکاؤنٹنٹ جنرل صوبہ خیبرپختونخوا جمع شدہ ٹیکس کٹوتی کی رقم ماہانہ بنیاد پر متعلقہ محکمہ کے سرکاری اکاؤنٹ میں سرکاری خزانے میں جمع کردیتاہے۔

 

وزیرٹرانسپورٹ شاہ محمدوزیرنے ایم پی اے نگہت اورکزئی کے سوال پرکہاکہ ٹرانسپورٹ کے شعبے میں مرجرایریامیں دو پراجیکٹ چل رہے ہیںصوبائی حکومت نے فیصلہ کیاہے کہ جتنے بھی محکمے ہیں انکادائرہ کارضم اضلاع تک بڑھایاجائے گا جس کیلئے ہمیں فرنیچر،گاڑیاں اوردیگر سازوسامان کی ضرورت پڑتی ہے جس پر 75ملین خرچ ہوا ہے حمیراخاتون نے سوال کیاکہ صوبہ بھرمیں اشیاضروریہ کے جو سستابازارقائم کئے جاتے ہیں ان میں عام مارکیٹ کے مقابلے میں اشیاکی قیمتیں کتنی کم رکھی جاتی ہیں علاوہ ازیں لوئرچترال میں کوئی سستابازارنہیں لگاجرمانوں کاڈیٹامکمل نہیں ملا۔

 

معاون خصوصی کامران بنگش نے کہاکہ جہاں تک سستابازارمیں اشیاکی قیمتوں کوکنٹرول کرنے کاتعلق ہے انکادائرہ اختیارضلعی انتظامیہ کے پاس ہے اور اس دوران جن افرادکیخلاف کی گئی ہے یا ان پر جرمانے کئے گئے ہیں اوررقم وصول کی گئی ہے انکاتعلق بھی ضلعی انتظامیہ کے پاس ہے 26ٹی ایم ایزمیں سستابازارلگے صوبائی حکومت نے مرستیال کے نام سے ایپ متعارف کی ہے جس پر سستے بازارسے متعلق معلومات دستیاب ہیں ایم پی اے صلاح الدین کے سوال پر کامران بنگش نے کہاکہ محکمہ بلدیات کے زیرانتظام مختلف ڈیویلپمنٹ کے ملازمین دوفیصد کوٹہ کے تحت الاٹمنٹ کی پالیسی1989میں جاری ہوئی جس کے تحت اس پرعمل درآمد شروع ہوا تاہم اب سپریم کورٹ کے احکامات کی روشنی میں مذکورہ کوٹہ کیلئے نئے پلاٹ الاٹمنٹ رولز کا مسودہ تیار کیاگیا جوکہ صوبائی کابینہ کوبرائے منظوری پیش کیاجائے گاجس کے بعد محکمہ بلدیات کے زیراہتمام مختلف ڈویلپمنٹ اتھارٹیزمیں دوفیصد کوٹہ ملازمین کیلئے پلاٹس مختص کئے جائینگے۔

 

سپیکرمشتاق غنی نے اے ڈی پی میں پشاورکیلئے محکمہ مواصلات کے ترقیاتی پراجیکٹ سے متعلق ایم پی اے خوشدل خان کے سوال کابروقت جواب موصول نہ ہونے پر رولنگ کے تحت سوال قائمہ کمیٹی کے حوالے کردیاایوان نے ٹی ایم اوخیبرمیں مبینہ طو رپرغیرشفاف بھرتیوں سے متعلق بصیرت بی بی کاسوال بھی متعلقہ کمیٹی کے سپردکردیا۔

 

ن لیگ کے رکن اختیارولی نے سوال کیاکہ ٹی ایم اے نوشہرہ کے ڈیڑھ سوسے زائدملازمین تنخواہیں تولیتے ہیں مگر سالوں سے ڈیوٹیاں نہیں دیتے ضلع کچرے کے ڈھیرمیں تبدیل ہوچکاہے صفائی عملہ نہیں آتے انکی ڈیوٹیاں اشرافیہ کے گھروں ،حجروں اورباغات میں ہے۔

 

معاون خصوصی کامران بنگش نے کہاکہ صفائی کیلئے سات ڈویژنل ہیڈکوارٹرمیں ڈبلیوایس ایس سی بنائی ہے اسکادائرہ کار بڑھارہے ہیں نوشہرہ میں تیزی سے اربنائزیشن ہورہی ہے اسی حکومت میں ڈبلیوایس ایس سی کو نوشہرہ میں بنائیں گے ٹی ایم اے کی سطح پر ایگزیکٹیوکمیٹی نے ملازمین کی ڈیوٹیوں سے متعلق جو اعدادوشماردئیے ہیں وہ غلط نہیں ہوسکتی۔