دلیل کی بجائے لاٹھی گولی سے جواب دینا بزدلی ہے، اے این پی

دلیل کی بجائے لاٹھی گولی سے جواب دینا بزدلی ہے، اے این پی

پشاور(سٹاف رپورٹر) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی ترجمان زاہد خان نے صحافی احمدنورانی کی اہلیہ عنبرین فاطمہ پر مبینہ حملے کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس فاشسٹ حکومت میں سچ بولنے پر پابندیاں بڑھتی چلی جارہی ہے۔

 

انہوں نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ ایک صحافی کا کام خبر دینے ہوتا ہے جو انہوں نےدی، انکے خاندان کو کیوں نشانہ بنایا جارہا ہے؟ حکومت اسکی تحقیقات کرائے اور ذمہ داروں کو سزا دیں۔

 

انہوں نے مزید بتایا کہ احمدنورانی کی اہلیہ عنبرین فاطمہ بھی گذشتہ 15سالوں سے صحافت سے وابستہ ہے،انکی بہادری پر داد دیتے ہیں۔دلیل کی بجائے لاٹھی گولی سے جواب دینا کمزور اور بزدلوں کی نشانیاں ہیں۔

 

انہوں نے کہاکہ موجودہ حکومت اپنے مخالفین کو بے روزگار کرکے، انہیں ڈرا دھمکا کے خاموش کرنا چاہتی ہے اور مطالبہ کیا کہ اس واقعہ کی مکمل تحقیقات کرائی جائے اور ذمہ داروں کو سامنے لایا جائے۔ان کا کہنا تھا کہ آج صحافت اور صحافیوں پر جتنی پابندیاں ہیں، آمرانہ دور میں بھی نہیں دیکھی گئیں۔ صحافیوں ہی کی وجہ سے اقتدار میں آئے ہوئے انسان نے صحافیوں کو بے روزگار کیا۔آج بے روزگاری اور مہنگائی سے تنگ ایک صحافی نے خودکشی کی، کوئی ہے جو جواب دیں؟