اے این پی کا موسلادھار بارشوں سے متاثرہ علاقوں کو آفت زدہ قرار دینے کا مطالبہ

اے این پی کا موسلادھار بارشوں سے متاثرہ علاقوں کو آفت زدہ قرار دینے کا مطالبہ


عوامی نیشنل پارٹی خیبر پختونخوا کے صدر ایمل ولی خان نے کہا ہے کہ حالیہ بارشوں کے سبب عوام مشکلات کا شکار ہیں، صوبائی حکومت غافل ہے۔ بارشوں اور طغیانی کے باعث لوگوں کے گھروں اور مکانات کو نقصان پہنچا ہے۔ 

 

صوبائی حکومت  قدرتی آفت کے دوران بھی صوبے کے عوام کو فراموش کرتی آرہی ہے۔ تاحال عوام کے ریلیف کیلئے کوئی قدم نہیں اٹھایا گیا ہے اور عوام اپنی مدد آپ کے تحت امدادی سرگرمیوں میں مصروف ہیں۔ 

 

اے این پی کے صوبائی صدر ایمل ولی خان نے بارشوں سے متاثرہ علاقوں کو آفت زدہ قرار دینے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ صوبہ بھر میں بارشوں کے باعث کھڑی فصلوں کو بھی شدید نقصان پہنچا ہے۔ باالخصوص صوابی، مردان، چارسدہ اور ملحقہ علاقوں میں تمباکو کی فصل، سبزیوں اور پھلوں کے باغات تباہی نے کسانوں کو پریشانی نے دوچار کردیا ہے۔

 

 ایک جانب مہنگے بیچ، یوریا اور دوائیوں کی قیمتیں آسمان سے باتیں کررہی ہے تو دوسری جانب اس قسم کے مسئلوں میں حکومتی کوتاہی کسانوں کی مشکلات میں مزید اضافے کا باعث بن رہی ہے۔

 

 ان کا کہنا تھا کہ صوبائی حکومت صوبہ بھر میں فوری طور پر بارشوں سے متاثرہ علاقوں کو آفت زدہ قرار دے۔ نقصانات کا تخمینہ لگاکر متاثرہ عوام کے لئے مالی معاونت کا اعلان کیا جائے۔ متاثرہ رہائشی آبادیوں کو مزیدخطرات سے بچانے کیلئے انتظامات کئے جائیں۔

 

 انہوں نے مزید کہا کہ صوبہ بھر میں بارشوں کا سلسلہ ابھی رکا نہیں ہے، حکومت اور متعلقہ اداروں کو کسی بھی ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کیلئے چوکس رہنا ہوگا، تاکہ عوام کو کسی بھی خطرے سے بروقت بچایا جاسکے۔ صوبائی صدر ایمل ولی خان نے پارٹی ذمہ داران اور کارکنان کو بھی تلقین کی کہ متاثرہ عوام کی ہرممکن مدد یقینی بنائے۔