ہماری معدنیات کو تو تباہ کردیا گیا، اب جنگلات کو بھی جلایا جارہا ہے: میاں افتخار

ہماری معدنیات کو تو تباہ کردیا گیا، اب جنگلات کو بھی جلایا جارہا ہے: میاں افتخار

پشاور۔۔۔عوامی نیشنل پارٹی کے سیکرٹری جنرل میاں افتخارحسین نے کہا ہے کہ ہماری معدنیات کو تباہ کردیا گیا ہے اور اب جنگلات کو بھی جلایاجا رہا ہے۔ خیبرپختونخوا کے وزیراعلیٰ کا تعلق جنگلات کے علاقے سے ہیں، وہاں پر بھی جنگلات جلائے گئے جس کا پوچھنے والا کوئی نہیں۔مرکزی حکومت نے نوٹس لیا لیکن خیبرپختونخوا کے حکمران ابھی تک سوئے ہوئے ہیں۔

 

پشاور پریس کلب کے سامنے کوہ سلیمان کے جنگلات میں لگی آگ کے بجھانے میں غفلت کے خلاف احتجاجی مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے میاں افتخارحسین نے کہا کہ عمران خان کی حکومت ختم کرنے کا رونا رونے والے جان لیں کہ جنگلات ہمارا اثاثہ ہے۔بلین ٹری سونامی کو سیاسی مقاصد کیلئے استعمال کیا گیا لیکن جنگلات کے تحفظ کیلئے کوئی اقدام نہیں اٹھایا جارہا۔پختونخوا کے جنگلات میں بھی آگ لگنے کے کئی واقعات رونما ہوئے لیکن کوئی تحقیقات نہیں ہوئیں۔

 

ان کا کہنا تھا کہ معدنیات، جنگلات سمیت قومی وسائل کو تباہ کرنے کے خلاف ہر فورم پر آواز اٹھائی جائیگی۔کوہ سلیمان پر چلغوزے، زیتون اور صنوبر کے درخت جلائے گئے ہیں، ذمہ دار کون ہیں؟ تخمینہ لگایا جائے،جو نقصان ہوا ہے اس کا مداوا کیا جائے اور جنگلات کو محفوظ کیا جائے۔

 

میاں افتخارحسین نے کہا کہ ان جنگلات میں نایاب جانور زندہ جلائے گئے، تین افراد بھی شہید ہوچکے ہیں، کئی ابھی تک لاپتہ ہیں۔جنگلات، معدنی وسائل، قومی وسائل اور قومی حقوق کیلئے اسلام آباد تک احتجاج کا حق محفوظ رکھتے ہیں