پشتونوں پر تجارت کے تمام دروازے بند ہیں، ایمل ولی خان

پشتونوں پر تجارت کے تمام دروازے بند ہیں، ایمل ولی خان

چارسدہ۔۔۔عوامی نیشنل پارٹی خیبرپختونخوا کے صدر ایمل ولی خان نے کہا ہے کہ پاکستان میں مڈل کلاس کو زندگی گزارنا مشکل سے مشکل تر ہوتا جارہا ہے۔عمران نیازی نے جو وعدے کئے، ایک ایک جھوٹ اور غلط ثابت ہوچکے ہیں۔

 

نستہ چارسدہ میں شمولیتی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ عوام کی زندگیوں میں تبدیلی آچکی ہیں، روزگار، گھر، کام کاج، مزدوری سب کچھ سے ہاتھ دھوبیٹھے ہیں۔غریب عوام کیلئے آج زندگی گزارنا ایک چیلنج سے کم نہیں، فاقہ کشیوں پر مجبور ہیں۔حکمران ان کا خیال رکھ رہے ہیں جنہوں نے انہیں سلیکٹ کیا ہے، یہ عوامی نمائندے نہیں تو عوام کا کیا سوچیں گے؟ پختونخوا کو اپنے وسائل پر اختیار اور حقوق نہیں دیے جارہے، جو حقوق کی بات کرتا ہے انہیں پارلیمنٹ سے باہر رکھا جاتا ہے۔ ہمیں اگر اپنے وسائل پر حق دیا جائے تو کم از کم یہاں مہنگائی نہیں ہوگی۔

 

ایمل ولی خان نے کہا کہ ڈیڑھ روپے فی یونٹ بجلی پختونخوا میں پیدا ہورہی ہیں لیکن ہمیں اس پر اختیار نہیں دیا جارہا۔معدنیات، گیس، پٹرولیم مصنوعات، کوئلہ غرض مختلف قسم کے وسائل موجود ہیں۔پشتونوں پر تجارت کے تمام دروازے بند کئے گئے ہیں، ہمارے کاروباری طبقے کا معاشی قتل کیا جارہا ہے۔پشتونوں کو اگر اپنے وسائل پر اختیار دیا گیا تو مہنگائی سمیت کوئی مسئلہ ہمارے لئے مسئلہ نہیں ہوگا۔

 

اے این پی کے صوبائی صدر ایمل ولی خان کا مزید کہنا تھا کہ اٹھارہویں آئینی ترمیم اور پشتونوں کو انکا حق دلانے کی وجہ سے ہمیں پارلیمنٹ سے باہر رکھا گیا۔ہمیں پارلیمنٹ سے باہر رکھا گیا لیکن عوام کے درمیان رہ کر عوام کے حق کی جنگ لڑتے رہیں گے۔