حکومت کی عوام دشمن پالیسیاں،اے این پی نے تحریک التوا جمع کرا دی

حکومت کی عوام دشمن پالیسیاں،اے این پی نے تحریک التوا جمع کرا دی


عوامی نیشنل پارٹی نے صوبائی اسمبلی میں ایک تحریک التوا جمع کرائی جس میں سپیکر کی توجہ اس جانب مبذول کرائی گئی ہے کہ گذشتہ دس سال سے پی ٹی آئی خیبر پختونخوا میں ناقص و عوام دشمن پالیسیوں پر گامزن ہے اور صوبائی حکومت صوبے کے آئینی حقوق سے دستبردارہو گئی جبکہ کہیں بھی ترقی کا نام و نشان تک نہیں، عوام کو ذہنی مریض بنا دیا گیا ہے،

 

 تحریک التوا پارٹی کے صوبائی جنرل سیکرٹری و پارلیمانی لیڈر سردار حسین بابک نے جمع کرائی، تحریک التوا میں کہا گیا ہے کہ صوبے میںبے روزگاری اور مہنگائی نے عوام کو ذہنی کرب میں مبتلا کر رکھا ہے،بھتہ خوروں کا راج ہے اور اغوا برائے تاوان کی وجہ سے لاکھوں پختون نکل مکانی پر مجبور ہو گئے ہیں،

 

سردار بابک نے مزید کہا کہ بدقسمتی سے پختونوں کے وسائل عمران خان کی اشتعال انگیز اور نفرت آمیز سیاست کیلئے استعمال ہو رہے ہیں، 

 

انہوں نے کہا کہ وزیر اعلیٰ، قائمقام گورنر ،وزرا اور ممبران اسمبلی سڑکوں و چوراہوں کو بند کر کے دہشت گردی اور مہنگائی کے مارے عوام کے زخموں پر نمک پاشی  میںمصروف ہیں،

 

 انہوں نے کہا کہ پختونخوا کے وزیر اعلیٰ  سرکاری وسائل استعمال کرتے ہوئے شاہراہوں و چوکوں کو انتظامیہ و پولیس کی سرپرستی  میں بند کر کے گالم گلوچ اور اشتعال انگیزی کو فروغ دے رہے ہیں،

 

انہوں نے کہا کہ چیف سیکرٹری پختونخوا، آئی جی پی اور انتظامیہ کس قانون کے تحت عمران کی فتنہ انگیز اور اشتعال انگیز سیاست کیلئے استعمال ہو رہے ہیں، 

 

سردار حسین بابک نے کہا کہ کیا وزیر اعلیٰ،چیف سیکرٹری اور آئی جی صوبے کے پرامن اور مہذب شہریوں کو دعوت دے رہے ہیںکہ وہ ان سب کے دفاتر کے سامنے مظاہرے کریں،کیاحکومت  پولیس اور انتظامیہ کو آئینی و قانونی ذمہ داریاں نبھانے کی بجائے غیر قانونی سرگرمیوں کا نہیں پوچھا جائے گا،

 

انہوں نے کہا کہ کرپٹ ترین نااہل اور مسلط صوبائی حکومت کی ان غیر قانونی عوام دشمن اور اشتعال انگیز سرگرمیوں کے خلاف ہر فورم پر آواز اٹھائی جائے گی، 

 

انہوں نے کہا کہ پختونخوا کے غریب پسماندہ اور بدامنی کے مارے ہوئے عوام کو ان نااہلوں، مہروں اور مسلط ٹولے کے رحم و کرم پر نہیں چھوڑا جائے گا۔