بونیرماربل کانوں میں بلاسٹنگ پر پابندی،ہزاروں مزدور بے روزگار ہونے کا خدشہ

بونیرماربل کانوں میں بلاسٹنگ پر پابندی،ہزاروں مزدور بے روزگار ہونے کا خدشہ

پشاور( نیوز رپورٹر) ضلعی انتظامیہ بونیر نے ضلع بھر میں ماربل کانوں میں بلاسٹنگ پرپابندی عائد کردی ،انتظامیہ کی جانب سے ماربل کان کنی پر پابندی کی وجہ سے ہزاروں لوگوں کے بے روزگار ہونے کے ساتھ ساتھ لیز ہولڈرز کو بھی بھاری نقصان پہنچنے کا خدشہ پیدا ہوگیا،

 

ضلع انتظامیہ نے ملاکنڈ ڈویژن کے مختلف اضلاع میں طالبن کی دوبارہ آمد پر ضلع بھر میں ماربل کان کنی میں بلاسٹنگ پر پابندی عائد کردی جس کی وجہ سے ضلع بونیر میں ساڑھے تین سو سے زائد کارخانوں ماربل کی سپلائی بندش کی وجہ سے بند ہونے کا خدشہ پیدا ہوگیا ہے ،

 

ذرائع کے مطابق ضلعی انتظامیہ نے امن امان کی خراب صورتحال کا بہانہ بناکر بونیر میںکانکنی کی بلاسٹنگ پر پابندی عائد کردی جس کی وجہ سے ضلع بھر میں ہزاروں لوگوں کا روزگار متاثر ہوا ،ضلع بونیر میں کان کنی میں بلاسٹنگ پابندی سے ضلع بونیر کے ساڑھے تین سو سے زائد کارخانوں سمیت دیگر اضلاع مردان ،جانگیرہ ،اور ملک کے دیگر شہروں کو ماربل سپلائی بند ہوگئی ہے ،

 

ذرائع کے مطابق ضلعی انتظامیہ کی اس اقدام کی وجہ سے نہ صرف لیز ہولڈر کا نقصان ہوگا بلکہ سرکاری خزانے کو ماربل سیکٹر سے ملنی والی محصولات بھی بند ہوگئی جس سے سرکاری خزانے کو کروڑوں روپے کے نقصان کا سامنا ہوگا،

 

ذرائع کے مطابق امن امان کی صورتحال تو دیگر ضلعوں میں بھی ہے لیکن ضلعی انتظامیہ نے صرف ضلع بونیر کے ماربل کان کنی میں بلاسٹنگ پر پابندی عائد کردی گئی ،

 

واضح رہے کہ بونیر میں ماربل سیکٹر اس سے پہلے بھی دہشت گردی کی لہر اور ملک میں جاری بجلی لوڈشیڈنگ اور بجلی بلوں کی وجہ سے شدید متاثر ہوا ہے جس کی وجہ سے کئی لوگوں نے بجلی بھاری بلوں کی وجہ سے اپنی کارخانے بند کردیئے ہیں۔