چترال میں بارشوں سے 3 گھر تباہ، فصلیں سیلابی ریلوں کی نذر

چترال میں بارشوں سے 3 گھر تباہ، فصلیں سیلابی ریلوں کی نذر

 ضلع چترال میں حالیہ بارشوں اور سیلابی ریلوں نے ایک بار پھر تباہی مچادی، تین گھر اور تیار فصلیں بارشوں اور سیلابی ریلوں سے تباہ ہو گئیں۔

 

اپرچترال کے چرون اور چترال گول میں بارشوں سے برساتی ندی نالوں میں طغیانی آگئی ۔ گبور ویلی میں میردین کے مقام پر سیلابی ریلہ گاوں میں داخل ہوگیا جس سے 3 گھر مکمل طور تباہ جبکہ گندم اور آلو کی کھڑی فصلیں سیلاب کی نذر ہوگئیں۔ 

 

گرم چشمہ، گبور اور موشین گول کے علاقے سیلاب سے زیادہ متاثر ہوئے، گرم چشمہ روڈ مختلف مقامات پر بہہ گیا، شاہ سلیم روڈ اوشیاک کے مقام پر سیلابی ملبے کی وجہ سے ٹریفک معطل ہوگئی ہے۔

 

مقامی لوگوں کے مطابق پی ڈی ایم اے کی جانب سے متاثرہ علاقوں میں تاحال کوئی حکومتی امدادی ٹیمیں اور امدادی اشیاء نہ پہنچ سکی جس کی وجہ سے لوگوں کو شدید مشکلات کا سامنا  ہے

 

حالیہ بارشوں اور سیلاب ریلوں سے پشاور کے تحصیل متھرا بھی زرعی زمینوں حفاظتی بند بہہ گیا 

 

 پی ڈی ایم اے کے مطابق گزشتہ 24 گھنٹے کے دوران بارشوں سے مختلف حادثات کے نتیجے میں ایک شخص جاں بحق اور 2 زخمی ہوئے۔ 

 

صوبے بھر میں 23 مکانات کوجزوی جبکہ 14 مکانات کو مکمل نقصان پہنچا۔ چترال کے مختلف علاقوں میں برساتی نالوں میں طغیانی کے باعث مختلف شاہراہوں پر ٹریفک معطل ہو گئی ہے۔ 

 

پی ڈی ایم اے کے مطابق چترال اور دیگر متاثرہ اضلاع میں رابطہ سڑکوں کی بحالی اور دیگر امدادی سرگرمیاں جاری ہیں۔ ڈی جی پی ڈی ایم اے کا کہنا ہے کہ برساتی نالوں اور دریاں میں پانی کے بحا کو مونیٹر کرنے کی ہدایت کی ہے۔