افغان امن کا خواب مذاکرات سے پورا ہو سکتا ہے، حاجی غلام بلور

افغان امن کا خواب مذاکرات سے پورا ہو سکتا ہے، حاجی غلام بلور

پشاور ( شہباز نیوز) عوامی نیشنل پارٹی کے بزرگ رہنما اور سابق وفاقی وزیر حاجی غلام احمد بلور نے افغان حکومت اور عوام سے اپیل کی ہے کہ وہ خطے کے دیرپا امن کی خاطر آپس میں مل بیٹھ کر مسائل کا حل تلاش کریں۔

 

ان خیالات کا اظہار انہون نے روزنامہ شہباز پشاور کے ساتھ خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

 

انہوں نے کہا کہ جنگ کسی مسئلے کا حل نہیں ،تمام مسائل کا حل مذاکرات کے ذریعے ہی ممکن ہے، انہوں نے افغان بھائیوں سے درخواست کی اور کہا کہ اپنے بچوں کو دوسروں کی خاطر جنگ کا ایندھن نہ بنائیں ،اب وقت آ گیا ہے کہ افغان عوام آپس میں گفت و شنید کے ذریعے مسئلے کا حل تلاش کریں۔

 

حاجی غلام احمد بلور نے کہا کہ دوسرے ممالک افغانستان کے اندرونی معاملات میں ٹانگ اڑانے سے باز رہیں۔

 

سابق وفاقی وزیر نے کہا کہ میں دوسری حکومتوں سے بھی کہنا چاہتا ہوں کہ اس مسئلے سے دور رہیں کیونکہ کوئی بھی وہاں قدم نہیں جما سکتا، امریکہ کو اڈے نہ دینے کے حوالے سے حکومتی پالیسی کو سراہتے ہوئے حاجی غلام بلور نے کہا کہ اقدام خوش آئند ہے ،بصورت دیگر امریکہ پاکستان کی سرزمین استعمال کرتے ہوئے افغانستان میں کشت و خون کرتا جس سے ہمارے ملک کی سبکی ہوتی، انہوں نے کہا کہ افغان عوام طویل جنگ سے تنگ آ چکے ہیں لہٰذا اب وقت آ گیا ہے کہ تمام مسائل کا حل مذاکرات کی ذریعے تلاش کیا جائے۔

 

انہوں نے کہا کہ اے این پی کے اکابرین نے 40سال پہلے اس جنگ کو فساد قرار دیا تھا تاہم اگر اس وقت ان کی بات تسلیم کر لی جاتی تو لاکھوں زندگیاں بچ سکتی تھیں جو اس جنگ کا ایندھن بن گئیں، انہوں نے کہا کہ اس وقت ہمارے اکابرین پر غداری کے فتوے لگائے گئے جبکہ آج پوری دنیا اس بات کی معترف ہے کہ افغانستان میں جہاد نہیں فساد تھا۔

 

یاد رہے کہ ان خیالات کا اظہار بزرگ سیاستدان حاجی غلام بلور نے روزنامہ شہباز کے ساتھ ایک خصوصی نشست میں کیا۔ ان کا یہ تفصیلی اور دلچسپ انٹرویو اتوار کو روزنامہ شہباز پشاور کے خصوصی صفحے پر قارئین پڑھ سکیں گے۔