این اے133 ضمنی انتخاب: نتائج کیلیے آرٹی ایس استعمال ہوگا

این اے133 ضمنی انتخاب: نتائج کیلیے آرٹی ایس استعمال ہوگا

لاہور کے حلقہ اين اے 133 ميں ضمنی انتخاب کے سلسلے میں نتائج کی وصولی کے لیے رزلٹ ٹرانسمیشن سسٹم (آر ٹی ایس) استعمال کیا جائے گا۔

 

ضمنی انتخاب کی مانيٹرنگ کے لیے کنٹرول روم قائم کر ديا گيا۔ سیکيورٹی کے لیے پوليس اور رينجرز کے جوان تعينات ہوں گے جبکہ انتخابی نتائج رینجرز کی نگرانی میں ریٹرننگ افسر تک پہنچائے جائیں گے۔

 

دوسری طرف حلقے میں ووٹوں کی مبینہ خریداری سے متعلق ویڈیوز کی انکوائری جاری ہے۔ اليکشن کمشنر پنجاب کے مطابق فرانزک رپورٹ موصول ہونے پر قانونی کارروائی کی جائے گی۔

 

ن لیگ کی اميدوار شائستہ پرويز ملک نے ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی پر کيا جانے والا 20ہزار روپے جرمانہ ادا کر ديا جبکہ پيپلزپارٹی کے ايم اين اے راجہ پرويز اشرف نے مانيٹرنگ افسر کی جانب سے عائد جرمانے کے خلاف اليکشن کميشن سے رجوع کا فيصلہ کيا ہے۔

 

ضمنی انتخاب کے لیے ریٹرنگ آفیسر نے اسکروٹنی کے بعد امیدواروں کی فہرست جاری کر دی ہے۔ 14 امیدواروں کے کاغذات نامزدگی منظور جبکہ 7 کے مسترد کیے گئے۔ کل 21 امیدواروں نے کاغذات نامزدگی جمع کروائے تھے۔

 

این اے 133 کا ضمنی انتخاب 5 دسمبر کو ہوگا۔ امیدواروں کو 12 نومبر کو انتخابی نشانات جاری کیے گئے۔

 

واضح رہے کہ قومی اسمبلی کی یہ نشست  پاکستان مسلم لیگ نون کے رہنما ملک پرویز کے انتقال کے باعث خالی ہوئی تھی۔ پرویز ملک گذشتہ 10 سال سے مسلم لیگ نون لاہور کے صدر بھی تھے۔ پرویز ملک 18نومبر 1947 کو پیدا ہوئے۔ مرحوم پرویز ملک کی اہلیہ اور بیٹے بھی قومی اسمبلی کے رکن ہیں۔