وفاقی تحقیقاتی ادارے نے تحریک انصاف کے خلاف گھیرا تنگ کر دیا

وفاقی تحقیقاتی ادارے نے تحریک انصاف کے خلاف گھیرا تنگ کر دیا

 وفاقی تحقیقاتی ادارے (ایف آئی اے) نے سابق گورنر خیبر پختونخوا اور سابق سپیکر قومی اسمبلی کو کل طلب کر لیا۔ سابق گورنر شاہ فرمان اور سابق سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کو ممنوعہ بیرون ممالک فنڈنگ کیس میں طلب کیا گیا ہے۔


ایف آئی اے کی جانب سے سابق گورنر کو جاری نوٹس میں لکھا گیا ہے کہ ایف آئی اے نے الیکشن کمیشن کے احکامات کے نتیجے میں بیرون ممالک سے تحریک انصاف کے مختلف اکاؤنٹس کو منتقل رقم سے متعلق تحقیقات کا آغاز کر دیا ہے،

 

ایف آئی اے کے پاس دستیاب معلومات کے مطابق گورنر شاہ فرمان کے نام بنک اسلامی (کسب) میں اکاؤنٹ نمبر 0005-127746-001 ہے جس کو وہ استعمال کرتا رہا، اسی بنیاد پر سابق گورنر شاہ فرمان کو تحقیقات کیلئے ایف آئی اے پشاور کے دفتر میں 18اگست کو طلب کیا گیا ہے۔ اسی طرح سابق سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کے نام جاری نوٹس میں لکھا گیا ہے کہ اسد قیصر کے نام پر بھی بنک اسلامی (کسب) میں اکاؤنٹ نمبر 0005-127746-001 اور حبیب بینک لمیٹڈپشاور میں اکاؤنٹ نمبر 0959-79112838-03 کھولا گیا تھا جس سے وہ رقم نکلواتا رہا ہے۔


وفاقی تحقیقاتی ادارے نے اسد قیصر کو جاری نوٹس میں لکھا ہے کہ اس سے قبل بھی 11اگست کو آپ کووفاقی تحقیقاتی ادارے کے دفتر میں پیش ہونے کا کہا گیا تھا مگر آپ پیش نہیں ہوئے ایک بار پھر آپ کو اس نوٹس کے ذریعے آگاہ کیا جاتا ہے کہ 18 اگست کو وفاقی تحقیقاتی ادارے دفتر پشاور حیات آباد میں ذاتی حیثیت میں پیش ہو جائیں اور متعلقہ بنک اکاؤنٹس سے متعلق اپنا بیان ریکارڈ کرائیں۔