حکومت مہنگائی کو کنٹرول میں مکمل طورپر ناکام ہو چکی ہے، آفتاب شیرپاؤ

حکومت مہنگائی کو کنٹرول میں مکمل طورپر ناکام ہو چکی ہے، آفتاب شیرپاؤ

پشاور (شہباز نیوز ) قومی وطن پارٹی کے چیئرمین آفتاب احمد خان شیرپائو نے بڑھتی ہوئی مہنگائی کو کنٹرول کرنے میں ناکامی پر حکومت کو آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے کہا کہ عوام مہنگائی کی چکی میں پس چکے ہیں'اب وقت آگیا ہے کہ سیاسی جماعتوں کی صف اول کی قیادت مہنگائی کیخلاف احتجاجی مظاہروں کی خود قیادت کرے تاکہ حکومت کو عوام کے لیے آسانیاں پیدا کرنے پر مجبور کیا جاسکے۔

 

ان خیالات کا اظہار انہوں نے گلبہار میں پارٹی کی نویں یوم تاسیس کی مناسبت سے منعقدہ ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا' تقریب میں پارٹی کی مرکزی صوبائی اور ضلعی عہدیداروں اور کارکنوں نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔

 

ایک حالیہ سروے کے اعدادوشمار کا حوالہ دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پلس کنسلٹنٹ کی رپور ٹ کے مطابق 77%لوگوں کا خیال ہے کہ حکومت کی معاشی پالیسیاں غلط سمت میں جاریہ ہیں ' پاکستان ڈیموکریٹک مومنٹ کے احتجاج کی حمایت کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ حکومت مہنگائی کو کنٹرول کرنے اور عوام کو ریلیف دینے کے معاملے پر مکمل طور پر ناکام ہو چکی ہے لہٰذا ان کی جماعت بھی آج سے احتجاجی مظاہرے شروع کرنے کا ارادہ رکھتی ہے/

 

وزیراعظم سے مستعفی ہونے کا مطالبہ کرتے ہو ئے  انہوں نے کہا کہ ملک میں آزاد اور شفاف انتخابات کے ذریعے ہی لوگوں کو اپنے حقیقی نمائندے چننے کا موقع مل سکے گا'موجودہ حکمرانوں کے پاس ملک کو بحرانی کیفیت سے نکالنے کا کوئی حل نہیں جس کی وجہ سے لوگوں کی پریشانی میں روز بروز اضافہ ہو رہا ہے انہوں نے کہا کہ ملک کو گوں ناگو مسائل ومشکلات کا سامنا ہے مہنگائی کی شرح میں اضافہ ہو رہا ہے جبکہ روپے کی قدر میں کمی کیوجہ سے لوگوں کی قوت خرید جواب دے چکی ہے'بے تحاشہ قرضہ لینے کے باوجود بھی معیشت میں بہتری کی کوئی امکانات نظر نہیں آرہے ہیں۔

 

انھوں نے کہا کہ افغانستان کی صورتحال کے حوالے سے حکومت کے پاس کوئی واضح پالیسی نہیں امن وامان کی بگڑتی ہوئی صورتحال سے نمٹنے کے لیے ہنگامی بنیادوں پر اقدامات اٹھانے پر زور دیتے ہوئے کہا کہ حکومت کو چاہیے کہ حالات کو مزید خراب ہونے سے پہلے مناسب اقدامات اٹھائے 'انہوں نے صحافی برادری کو ہراساں کرنے اور پاکستان میڈیا ڈویلپمنٹ اتھارٹی کے مجوزہ قانون کی مخالفت کرتے ہوئے کہا کہ اس سے صحافتی آزادی سلب ہونے کا خدشہ ہے۔ انھوں نے کہا کہ ان کی جماعت جمہوریت کی فروغ کے لیے اپنی کوشش جاری رکھے گی۔