لوئر دیر میں سیاحت کے وسیع مواقع‘حکومتی چشم پوشی المیہ ہے، زاہد خان

لوئر دیر میں سیاحت کے وسیع مواقع‘حکومتی چشم پوشی المیہ ہے، زاہد خان

تیمرگرہ ( بیورورپورٹ )عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی ترجمان سابق سینیٹرزاہد خان نے کہا ہے کہ لوئر دیر میں سیاحت کے حوالے سے وسیع مواقع موجود ہونے کے باوجود حکومتی چشم پوشی المیہ ہے ،سڑکوں کی ابتر صورت حال اور جنگلات کی بے دریغ کٹا ئی کے سبب علاقہ کی خوبصورتی ماند پڑنے کا خدشہ ہے ۔

 

اپنی رہائش گاہ اوڈیگرام ہاؤس میں صحافیوں سے گفتگو کر تے ہو ئے سینیٹر زاہد خان کا کہنا تھا کہ تین سال گزرنے کے با وجود پورے خیبر پختونخوا خصوصاً دیر میں کو ئی میگا پراجیکٹ شروع نہیں کیا جاسکا ،میری کوششوں سے دیر لوئر کیلئے شروع کیا جانے والا اربوں روپے کی خطیر لاگت سے قدرتی گیس فراہمی منصوبہ موجودہ ممبران اسمبلی کی ناہلی کے سبب سست روی کاشکار ہے ،چکدرہ ٹو چترال ایکسپریس وے منصوبہ ختم کرکے فنڈزدوسرے اضلاع کو منتقل کئے گئے۔

 

علاوہ ازیں ضلع دیرکو سی پیک منصوبے میں نظر انداز کرنا بھی مقامی آبادی میں احساس محرومی کا سبب بن رہا ہے ‘انہوں نے کہا کہ وزیر اعلیٰ ٰ صرف سوات کے نہیں بلکہ پورے خیبر پختونخوا کے وزیر اعلیٰ کا کردار نبھا ئے ۔

 

انہوں نے کہا کہ تیمرگرہ میڈ یکل کالج منصوبہ ہو یا بیو ٹیفیکیشن کے حوالے سے اعلانات ‘عوام کو مزید گمراہ کرنے کی بجائے حقیقی صورتحال سے آگاہ کیا جائے۔

سینیٹر زاہد خان کا کہنا تھا کہ محکمہ جنگلات حکام کی ناقص حکمت کے سبب لوگ جنگلات کاٹ رہے ہیں جس سے علاقہ کا قدرتی حسن ماند پڑنے کا خدشہ ہے اس حوالے سے موثر پا لیسی اپنانے کی ضرورت ہے ۔