اقتدار سے محرومی کے بعد عمران نیازی ذہنی توازن کھو چکے ہیں، ایمل ولی

اقتدار سے محرومی کے بعد عمران نیازی ذہنی توازن کھو چکے ہیں، ایمل ولی

پشاور۔۔۔عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی صدر ایمل ولی خان نے کہا ہے کہ اقتدار سے محرومی کے بعد نیازی ذہنی توازن کھو چکے ہیں، لوگوں کی ہمدردیاں حاصل کرنے کیلئے نیازی اداروں کے خلاف سازش کررہا ہے۔ ہمارا سوال بہت ہی سادہ ہے اگر اسی طرح کے بیانات کے نتیجے میں ایک پختون ایم این اے جیل کی سلاخوں کے پیچھے ہے تو عمران خان کو کس طرح کھلی چھوٹ دی گئی ہے؟۔ یہ منطق بھی سمجھ سے بالا ہے کہ بیانات آرمی چیف یا ایک مخصوص آفیسر کے خلاف ہیں، اگر ایک بندہ اسفندیار ولی خان پر تنقید کرے گا تو یہ نہیں کہا جاسکتا کہ یہ تنقید اے این پی پر نہیں ہے۔

 

باچا خان مرکز پشاور میں پی کے 68 کے مختلف افراد کی اے این پی میں شمولیت کے موقع پر اپنے خطاب میں صدر اے این پی خیبر پختونخوا ایمل ولی خان نے کہا کہ عمران خان نے اس وقت پوری فوج کو نشانے پر لے رکھا ہے۔ اگر فوج کہہ رہی ہے کہ انہیں سیاست میں نا گھسیٹا جائے تو کیوں کپتان آرمی کو غیر آئینی اقدامات پر اکسا رہا ہے؟ روز اول سے ہمارا موقف ہے کہ فوج کو آئین کے دائرے میں رہتے ہوئے سیاست سے دور رہنا چاہیئے۔ عمران کی بوکھلاہٹ کے پیچھے کرپشن کیسز اور فارن فنڈنگ کیس کا خوف ہے، سزا سے بچنے کے لیے عمران خان اداروں کو متنازع بنانے کی کوشش کر رہے ہیں۔

 

انہوں نے مزيد کہا کہ  عمران ایک بار پھر فوج کو تقسیم کرکے ملک کو 70 کی دہائی میں دھکیلنا چاہتا ہے۔ عمران اختلافات پیدا کرکے فوج کو بلیک میل کرنا چاہتا ہے تاکہ کسی نہ کسی طریقے سے اس کو اقتدار میسر ہو۔ عمران کا ایک ہی مطالبہ ہے کہ چاہے نظام کی تباہی کے بل بوتے پر ہی کیوں نہ ہو ان کو اقتدار سونپا جائے۔

 

صوبائی صدر ایمل ولی خان نے کہا کہ کرکٹ سے لے کر سیاست تک احسان فراموشی میں کپتان کا کوئی ثانی نہیں۔ تاریخ گواہ ہے کہ جاوید میانداد سے لیکر آج اکبر ایس بابر تک اس نے ہمیشہ اپنے محسنوں کو ہی دھوکہ دیا ہے۔ اس موقع پر صوبائی سینئر نائب صدر خوشدل خان ایڈووکیٹ، سیکرٹری مالیات مختیار خان، ایکزیگٹو آفیسر باچا خان ٹرسٹ معصوم شاہ باچا، ملک طارق اعوان اور دیگر ذمہ داران بھی موجود تھے۔