خیبر پختونخوا حکومت نے بجٹ میں پسماندہ اضلاع کو نظر انداز کیا 

خیبر پختونخوا حکومت نے بجٹ میں پسماندہ اضلاع کو نظر انداز کیا 

 پشاور(نیوزرپورٹر)خیبر پختونخوا حکومت آئندہ مالی سال میں اضلاع کی سطح پر سب سے کم فنڈکولائی پالس میں 25لاکھ 50ہزار روپے خرچ کریگی جبکہ قبائلی اضلاع میں سب سے کم ضلعی سطح پر ترقیاتی فنڈز کرم کیلئے1.4 ارب روپے رکھے گئے ہیں 

 

صوبائی سطح پر 653منصوبوں کیلئے 134.44 ارب روپے جبکہ ضم اضلاع میں مجموعی سطح کے 349منصوبوں کیلئے38.3 ارب روپے رکھنے کی تجویز ہے ۔ 

 

خیبر پختونخوا حکومت کی جانب سے تجویز کردہ مالی سال 2022-23کے ترقیاتی پروگرام کے تحت 120منصوبوں کیلئے20.52 ارب وزیراعلیٰ کے ابائی ضلع سوات کیلئے ،پشاور کے 139منصوبوں کیلئے ،13.45،ارب روپے رکھنے کی تجویز ہے

 

محکمہ پلاننگ اینڈویلپمنٹ ذرائع کے مطابق صوبائی حکومت نے  بیشتر فنڈزحکومتی ممبران کے حلقوں میں دیئے گئے منصوبوں کیلئے تجویز کیا ہے جس میں ضلع سوات کو سب سے زیادہ بیس ارب روپے کے منصوبے شامل ہیں

 

 اسی طرح بنوں کے 46منصوبوں کیلئے6.44 ارب روپے ، نوشہرہ کے 59منصوبوں کیلئے5.95 ارب، کوہاٹ کے 28منصوبوں کیلئے 4.22 ارب ، مردان کے 64منصوبوں کیلئے 3.73 ارب ،صوابی کے 50منصوبوں کیلئے 3.58 ارب،بونیر کے 31منصوبوں کیلئے3.49 ارب،مانسہرہ کے 32منصوبوں کیلئے3.43 ارب،ایبٹ آباد کے 43منصوبوں کیلئے 3.31 ارب، کرک کے 17منصوبوں کیلئے2.73 ارب ، ہری پور کے 31منصوبوں کیلئے2.55 ارب،ڈیرہ اسماعیل خان کے 45منصوبوں کیلئے 2.24 ارب،لکی مروت کے 25منصوبوں کیلئے 1.96 ارب،ہنگو کے 15منصوبوں کیلئے1.70 ارب روپے ،تجویز کیئے ہے

 

صوبائی حکومت نے آئندہ مالی سال کے ترقیاتی پروگرام میں ملاکنڈ کے 24منصوبوں کیلئے 1.56 ارب روپے ،لوئر دیر کے 31منصوبوں کیلئے 1.41 ارب،اپر دیر کے 32منصوبوں کیلئے 1.37 ارب،تورغر کے 10منصوبوں کیلئے1.28 ارب،چارسدہ کے 28منصوبوں کیلئے 1.27 ارب،ٹانک کے 19منصوبوں کیلئے1.2ارب روپےتجویز کیئے ہے ۔

 

اسطرح اپر چترال کے 14منصوبوں کیلئے 818 ملین روپے ،اپر کوہستان کے 11منصوبوں کیلئے681 ملین،شانگلہ کے 11منصوبوں کیلئے 422 ملین،بٹگرام کے 10منصوبوں کیلئے 334 ملین،لوئر چترال کے 4منصوبوں کیلئے287 ملین،لوئر کوہستان کے تین منصوبوں کیلئے بیس ملین روپے جبکہ کولائی پالس کے دو منصوبوں کیلئے 2.5 ملین روپے رکھنے کی تجویز ہے

 

 قبائلی اضلاع میں سب سے زیادہ جنوبی وزیرستان کے 93منصوبوں کیلئے 5.2 ارب روپے ،خیبر کے 53منصوبوں 3.98 ارب،مہمند کیلئے 3.1 ارب کے 24منصوبے ،جنوبی وزیرستان کے 42منصوبوں کیلئے 2.17 ارب،باجوڑ کے 32منصوبوں کیلئے 1.86 ارب،اورکزئی کے 22منصوبوں کیلئے 1.81 ارب  جبکہ کرم کے 32منصوبوں کیلئے1.40روپے رکھنے کی تجویز ہے ۔