پی ٹی آئی حکومت جماعتی بنیادوں پر بلدیاتی انتخابات کروانے سے بھاگ رہی ہے، ایمل ولی خان

پی ٹی آئی حکومت جماعتی بنیادوں پر بلدیاتی انتخابات کروانے سے بھاگ رہی ہے، ایمل ولی خان

پشاور۔۔۔عوامی نیشنل پارٹی خیبر پختونخوا کے صدر ایمل ولی خان نے کہا ہے کہ پی ٹی آئی حکومت جماعتی بنیادوں پر بلدیاتی انتخابات کروانے سے بھاگ  رہی ہے۔پاکستان کو بحرانوں میں دھکیلنے والےبلے اور تبدیلی کے دعویداروں سے عوام نفرت کرتی ہے۔ پی ٹی آئی اپنی ناکامی کے ڈر سے غیر جماعتی بنیادوں پر بلدیاتی انتخابات کروانے کیلئے ایڑی چوٹی کا زور لگا رہی ہے۔اے این پی جماعتی بنیادوں پر انتخابات کے عدالتی فیصلے کے ساتھ کھڑی ہے۔ اس طرح کے فیصلے جمہوریت کو مضبوط کرنےکے مترادف ہیں۔اگر سپریم کورٹ میں پشاور ہائی کورٹ کافیصلہ تبدیل ہوجاتا ہے تو اے این پی اسکے خلاف عوام میں جائے گی۔

 

باچا خان مرکز پشاور میں صوبائی جنرل سیکرٹری سردارحسین بابک، ترجمان ثمرہارون بلور، سیکرٹری ثقافت خادم حسین،ایڈیشنل جنرل سیکرٹری رحمت علی خان،  ڈپٹی جنرل سیکرٹری تیمورباز خان اور دیگر ذمہ داران کے ہمراہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے ایمل ولی خان نے کہا کہ جو بلدیاتی نظام موجودہ حکومت پیش کررہی ہے وہ عوام کے ساتھ مذاق  ہے۔ پی ٹی آئی کی حکومت آرٹیکل 140 کی خلاف ورزی کی مرتکب ہورہی ہے اورعوام کو  وسائل اور اختیارات سے محروم کرنا چاہتی ہے ۔

 

انہوں نے کہا کہ یہ تاریخ کی پہلی ضلعی حکومت ہوگی جس میں ضلع ہی نہیں ہوگا ۔جب ضلعی حکومت ہی نہیں ہوگی تو عوام کو انکے وسائل اور فیصلوں کا اختیار کیسے ملے گا۔اگر ضلعی حکومتوں کو ختم کرنے کا مقصد اختیارات کی جنگ کو ختم کرنا ہے تو پھر صوبے میں وزيراعلی کو بھی ختم کردیں اور سارے اختیارات چیف سیکرٹری کو منتقل کردیں۔تحریک انصاف کی حکومت جمہوریت کو کمزورکرنے پر تلی ہوئی ہے۔ اے این پی روزاول سے موجودہ بلدیاتی نظام کی خامیوں سے عوام کو آگاہ کرتی آرہی ہے۔

 

انہوں نے کہا کہ صوبائی حکومت موجودہ بلدیاتی نظام خیبر پختونخوا میں ٹرائل کے طور پر آزمانا چاہتی ہے۔ اس سے پہلے بھی تحریک انصاف کی حکومت بلدیاتی نظام کا تجربہ کرچکی ہے۔ ویسے تو پی ٹی آئی کی حکومت میں سارا ملک آرڈیننسز سے چلایا جارہا ہے۔ لیکن حکومت اگر چاہے تو بلدیاتی نظام کے ایکٹ میں ترمیم اسمبلی اجلاس بلا کر دو دن میں کرسکتی ہے۔اے این پی بلدیاتی انتخابات میں حصہ لینے کیلئے پوری طرح تیار ہے۔ حالات بدل چکے ہیں، جنات اور خلائی مخلوق مزید ووٹ چوری کرنےکے قابل نہیں رہے اور نا ہ…