پختونوں کو اپنی بجلی، گیس و دیگر وسائل پر اختیار دیا جائے، ایمل ولی

پختونوں کو اپنی بجلی، گیس و دیگر وسائل پر اختیار دیا جائے، ایمل ولی

لکی مروت(نمائندہ شہباز)عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی صدر ایمل ولی خان نے کہا ہے کہ خیبر پختونخوا معدنیات سے مالا مال صوبہ ہے یہاں بجلی، تیل اور گیس کی فراوانی ہے لیکن صوبے کے عوام ان سے مستفید نہیں ہوسکتے کیونکہ انہیں اپنے وسائل پر اختیار کا حق حاصل نہیں ہے ، یہ وہ واحد صوبہ ہے جو6ہزار میگا واٹ سستی بجلی پیدا کرتا ہے جو سوا ایک روپے یونٹ پڑتی ہے اور یہ اس کی ضرورت 3ہزار میگا واٹ سے دگنی ہے لیکن اس کے باوجود صوبے کے طول و عرض میں بجلی نہیں اور عوام لوڈ شیڈنگ کا عذاب جھیل رہے ہیں۔

 

وہ اپنے تین روزہ دورے کے آخری دن یہاں وانڈہ کلن میں سابق امیدوار صوبائی اسمبلی مطیع اللہ جان کی طرف سے منعقدہ بڑے عوامی اجتماع سے خطاب کررہے تھے اس موقع پر اہل علاقہ نے باچا خان کے پڑپوتے کی آمد کی خوشی میں زبردست آتشبازی کا مظاہرہ کیا۔

 

مطیع اللہ جان نے اپنے خطاب میں کہا کہ الیکشن کے دن ہیں نہ ایمل ولی خان ووٹ مانگنے آئے ہیں بلکہ وہ پختونوں میں ان کے حقوق سے متعلق بیداری لانا چاہتے ہیں اور اسی مقصد کے لئے قریہ قریہ، نگر نگر اور گھر گھر جارہے ہیں وقت آگیا ہے کہ پختون قوم اپنے حقوق اور وسائل پر اختیار کے لئے عوامی نیشنل پارٹی کے جھنڈے تلے متحد ہوجائے۔

 

اے این پی کے صوبائی صدر ایمل ولی خان نے آبا خیل ، وانڈہ امیر اور حافظ آباد میں بھی جلسوں سے خطاب کیا، دیگر مقررین میں سابق ایم پی اے محترمہ یاسمین ضیائ، سابق ایم پی اے گل صاحب خان، صوبائی ڈپٹی جنرل سیکرٹری تیمور باز خان، ممبر صوبائی کونسل ملک ریاض، ضلعی صدر علی سرور خان، جنرل سیکرٹری فرمان اللہ، انجینئر لطیف اللہ خان، حمید اللہ خان، ہمایون خان مروت، عمران اللہ مروت ، پختون ایس ایف کے ریاض مروت اور اشفاق آبا خیل، ممریز خان اور دیگر قائدین شامل تھے ۔ ایمل ولی خان نے کہا کہ پنجاب کو اپنی گندم پر اختیار ہے جو ضرورت سے زائد گندم ہی دیگر صوبوں کو دیتا ہے اور جب چاہتا ہے گندم کی سپلائی بند کردیتا ہے ہمیں اپنی بجلی، گیس اور دیگر وسائل پر ایسا ہی اختیار چاہیے جس سے دہشت گردی سے متاثرہ صوبے میں تعلیم اور صحت کی سہولتوں میں بہتری لانے اور روزگار کے مواقع بڑھانے میں مدد ملے ۔

 

انہوں نے کہا کہ پختون امن پسند ہیں وہ اپنے بچوں کے لئے روشن اور تابناک مستقبل چاہتے ہیں لیکن ان پر مذہب کے نام پر جنگ مسلط کی گئی ہے جس سے ہماری مساجد محفوظ رہیں نہ حجرے ، دہشت گردی کے خلاف اس نام نہاد جنگ نے پختون قوم کو اجاڑ کر رکھ دیا، ہمارے بزرگ، مائیں بہنیں اور بچے جہاد کے نام پر بے دردی سے شہید کئے گئے ، پختون من الحیث القوم مسلمان ہیں، امریکہ اور عیسائیوں کو ان کی سرزمین پر اسلام کی فکر کیوں کھائے جارہی ہے جنہیں جہاد کا شوق ہے وہ ہماری سرزمین خون آلود کرنے کی بجائے اسرائیل چلے جائیں۔

 

اے این پی رہنما نے کہا کہ بم دھماکے اور ان میں معصوم شہریوں کاقتل عام کسی طور جہاد نہیں، جنت کے ٹکٹ بانٹنے اور مذہب کے نام پر دھوکہ دینے والوں کا اصل چہرہ سامنے آچکا ہے عوام اچھی طرح جانتے ہیں کہ مذہب کو سیاست کے لئے استعمال کرکے ذاتی مفادات حاصل کئے گئے اور اصل مقصد اسلام آباد تک رسائی تھا ۔

 

انہوں نے کہا کہ ان کی پارٹی پختونوں کے حقوق پر کوئی سودے بازی نہیںکرے گی اور موقع ملا تو ان کے تمام جائز حقوق اور وسائل پر اختیار حاصل کرکے رہے گی۔