پارلیمان قوم کے حقوق کے حصول کا واحد راستہ ہے، ایمل ولی

پارلیمان قوم کے حقوق کے حصول کا واحد راستہ ہے، ایمل ولی

پشاور( شہباز نیوز)عوامی نیشنل پارٹی خیبر پختونخوا کے صدر ایمل ولی خان نے کہا ہے کہ پارلیمنٹ اے این پی کا ہدف نہیں،پارلیمان قوم کے حقوق کے حصول کا واحد راستہ ہے، قوم کے حقوق کے لئے اپنی جدوجہد جاری رکھیں گے اور حقوق حاصل کرکے رہیں گے۔

 

عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی صدر نے تین روزہ دورہ ہنگو کے آخری روز ٹل میں ورکرز کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ عوامی نیشنل پارٹی سر ہتھیلی پر رکھ کر پختون قوم کی خوشحالی کیلئے جدوجہد کررہی ہے ،زندگی اور موت اللہ کے ہاتھ میں ہے، تمام خطرات کے باوجود اے این پی آج بھی میدان میں ہے۔ باچا خان کے پیروکاروں کی منزل پختون قوم کے وسائل پر انکا اپنا اختیار ہے۔ قوم کے حقوق کیلئے کبھی کسی قربانی سے دریغ نہیں کریں گے۔

 

انہوں نے کہا کہ نئے پاکستان بنانے کے دعویداروں نے عوام کو تین سال میں بے حال کردیا ہے، مہنگائی اور بے روزگاری سرچڑھ کر بول رہی ہے اور عوام دووقت کی روٹی کیلئے ترس رہے ہیں۔ تبدیلی کے دعویداروں کی حکومت میں عوام بجلی اور گیس جیسی بنیادی سہولت سے بھی محروم ہے۔ ایک کروڑ نوکریاں دینے والوں نے لاکھوں لوگوں کو بے روزگار اور لاکھوں گھر بنانے والوں نے لاکھوں لوگوں کو بے گھر کردیا ہے۔

 

پاکستان کی خارجہ پالیسی بارے گفتگو کرتے ہوئے ایمل ولی خان نے کہا کہ پاکستان کی خارجہ پالیسی روز اول سے ناکام اور کبھی عوام کے مفاد میں نہیں بنی ہے۔ عمران خان ملک کا وزیر اعظم ہوتے ہوئے بھی اختیار سے محروم ہے اور فیصلے کہی اور سے تیار ہوکر آتے ہیں۔پاکستان کی ناقص خارجہ پالیسی کی ذمہ دار حکومت نہیں ان کو لانے والے ہیں اور وہ لوگ کبھی بھی عوامی مفاد میں خارجہ پالیسی نہیں بنائیں گے۔

 

انہوں نے کہا کہ افغانستان اور پاکستان کے درمیان تجارت دونوں ممالک کے عوام کے لئے نہایت اہمیت کی حامل ہے۔دونوں ممالک کے درمیان تجارت کے لئے تمام تجارتی راستوں کا کھلنا اور تجارتی منڈیوں کا بننا ناگزیر ہے، اگر عوامی مفاد میں خارجہ پالیسی بنتی تو پاکستان اور افغانستان کے درمیان ٹیکس فری تجارت ہونی چاہئے تھی۔دونوں کے ممالک کے بیچ تجارت سے دونوں جانب آباد پختونوں کی خوشحالی اور ترقی یقینی ہے۔