کراچی اور لاہور میں پی ٹی آئی اراکین اسمبلیوں کے گھروں پر چھاپے، MNA گرفتار

کراچی اور لاہور میں پی ٹی آئی اراکین اسمبلیوں کے گھروں پر چھاپے، MNA گرفتار

اسلام آباد۔۔۔پاکستان تحریک انصاف کے چیئر مین عمران خان کی جانب سے لانگ مارچ کے اعلان کے بعد پولیس لا ہور سمیت پنجاب کے مختلف علاقوں میں پی ٹی آئی رہنماؤں اور کارکنوں کے گھروں پر چھاپے مار رہی ہے۔

 

علی زیدی کے ترجمان کا کہنا ہےکہ کراچی کے علاقے ڈیفنس فیز 8 میں رکن سندھ اسمبلی شہزاد قریشی کے گھر پر چھاپہ مارا گیا۔

 

ترجمان نے کہا کہ سادہ لباس اہلکاروں نے شہزاد  قریشی کے گھر پر چھاپہ مارا تاہم شہزاد قریشی گھر پر موجود نہیں تھے۔

 

دوسری جانب پی ٹی آئی کے رکن سندھ اسمبلی شاہنواز جدون کے گھر پر چھاپہ مارا گیا ہے۔

 

شاہنواز جدون کے بھائی عبدالرحمان نے  کہا کہ پولیس چھاپے کے وقت شاہنواز جدون گھر پر نہیں تھے، پولیس مجھے لے گئی اور پوچھ گچھ کے بعد چھوڑ دیا۔

 

اس کے علاوہ پولیس کی بھاری نفری نے گارڈن ٹاؤن لاہور میں پی ٹی آئی کے رہنما حماد اظہر کے گھر پر چھاپا مارا تو وہاں یاسمین راشد سمیت دیگر رہنما موجود تھے۔

 

ذرائع کا کہنا ہے کہ ڈاکٹر یاسمین راشد نےگرفتاری سے بچنے کے لیے زمین پر بیٹھ کر دھرنا دے دیا تاہم پولیس حماد اظہر کی رہائش گاہ سے کسی پی ٹی آئی رہنما کو گرفتار کرنے میں کامیاب نہیں ہوسکی۔

 

ذرائع کے مطابق پی ٹی آئی کے کارکنان بھی پولیس ریڈ کی اطلاع ملنے پر حماد اظہر کی رہائش گاہ پہنچ گئے اور انہوں نے پولیس کے خلاف نعرے بازی کی۔

 

دوسری جانب میڈیا سے گفتگو  کرتے ہوئے حماد اظہر کی والدہ کا کہنا تھا کہ پولیس اہلکار زبردستی گھر میں داخل ہوئے اور تمام بیڈ رومز کی تلاشی لی۔


حماد اظہر کے گارڈز نے الزام لگایا کہ پولیس اہلکاروں نے انہیں بھی تشدد کا نشانہ بنایا

 

اس کے علاوہ پولیس نے سہراب گوٹھ سے پی ٹی آئی رکن قومی اسمبلی سیف الرحمان کو گرفتار کرلیا۔

 

علاوہ ازیں لاہور میں پی ٹی آئی یوتھ کے رہنما حافظ تنویر  کے گھر پر بھی چھاپہ مارا۔

 

پی ٹی آئی ذرائع کا کہنا ہےکہ چھاپے کے وقت حافظ تنویر انصاری گھر پر نہیں تھے جس کے باعث پولیس واپس چلی گئی۔