جعلی وزيراعظم کی رخصتی کی تیاریاں مکمل ہو چکی ہیں، ایمل ولی خان

جعلی وزيراعظم کی رخصتی کی تیاریاں مکمل ہو چکی ہیں، ایمل ولی خان

لوئردیر۔۔۔عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی صدر ایمل ولی خان نے کہا ہے کہ جعلی وزيراعظم کی رخصتی کی تیاریاں مکمل ہوچکی ہیں۔تابوت تیار ہے، چند دنوں میں جنازہ پڑھا دی جائے گی۔ اقتدار کیلئے وکٹیں گرانے والوں کی خود وکٹیں گر رہی ہیں۔ بقول حکومت جو لوگ کل پی ٹی آئی میں تھے تو ایماندار تھے، آج جب اپوزیشن کے ساتھ کھڑے ہیں تو بے ضمیر ہیں۔

 

تحصیل تیمرگرہ لوئر دیر میں انتخابی جلسے سے خطاب کرتے ہوئے صدر اے این پی خیبر پختونخوا ایمل ولی خان نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اے این پی کی جدوجہد صرف موجودہ حکومت کے  خاتمے کیلئے نہیں۔ چور دروازوں کو ہمیشہ کیلئے بند کرنے تک ہماری جدوجہد جاری رہے گی۔ اے این پی کیلئے لڑائی اقتدار کی نہیں، اپنے عوام کے حق کی ہے۔ ہمیں عوام کے حق حکمرانی سے کم کچھ قبول نہیں۔ جمہوریت کو بحال کرنے اور پارلیمان کو بالادست بنانے تک آرام سے نہیں بیٹھیں گے۔

 

انہوں نے کہا کہ پاکستان ایک نہایت نازک موڑ سے گزر رہا ہے۔ ملک میں جمہوریت اور حکومت مذاق بن گئی ہے۔ آئین اور قانون کی دھجیاں اڑائی جارہی ہیں۔ نااہل حکومت کو اقتدار میں لاکر ملک کا ستیاناس کردیاگیا ہے۔ ملک معاشی اور انتظامی بحرانوں کا شکار ہے۔ لوگ بے روزگاری کی اذیت برداشت کرنے پر مجبور ہیں۔  ملک میں مہنگائی کا طوفان لانے کے ساتھ ساتھ تبدیلی سرکار نے ہر ادارے کو تباہ و برباد کیا۔ پاکستان کے عوام مزید جعلی حکمرانوں کو برداشت کرنے کیلئے تیار نہیں۔

 

انہوں نے مزید کہا  انگریزوں سے آزادی کب کی  مل چکی ہے لیکن پختون معاشی طور پر آج بھی محکوم ہیں۔ وسائل ہمارے صوبے کے ہیں لیکن ہمارے صوبے کے عوام استعمال کرنے سے محروم ہیں۔ خیبر پختونخوا سب سے زیادہ اور سستی بجلی پیدا کرتا ہے۔ ایک جانب رائلٹی کی مد میں صوبے کو معاوضے سے محروم رکھا جارہا ہے تو دوسری جانب  وہی سستی بجلی عوام کو مہنگے داموں بیچی جارہی ہے۔ اے جی این قاضی فارمولے کے تحت آخری دفعہ صوبے کو اے این پی دور حکومت میں حق ملا۔ صوبائی حقوق پر تحریک انصاف پچھلے آٹھ سال سے تماشائی کا کردارادا کررہی ہے۔ گیس، معدنیات اور جنگلات سمیت دیگر وسائل کے ہوتے ہوئے بھی ہم محرومیوں کا شکار ہیں۔ پختون خطہ وسائل سے مالامال ہے لیکن ہمارے جوان آج بھی باہر ممالک میں مزدوریاں کرنے پر مجبور ہیں۔

 

یمل ولی خان نے مزيد کہا کہ اسلام کے نام پر سیاست کرنے والے پختون قوم کے سب سے بڑے دشمن ہیں۔ تاریخ گواہ ہے کہ اس خطے پر آگ لگانے میں یہی لوگ ملوث رہے ہیں۔ امریکی ڈالروں کی خاطر پرائی جنگ میں کود کر کروڑوں پختونوں کاقتل عام کیا گیا۔ پختون قوم باشعور ہوچکی ہے، مزيد ان کے دھوکے میں نہیں آئے گی۔

 

انہوں نے مزيد کہا کہ ہماری جدوجہد کسی الیکشن اور عہدے کی محتاج نہیں۔ اے این پی نے خدائی خدمتگار تحریک سے لیکر آج تک عوام کے حقوق کیلئے جدوجہد کی ہے۔ باچا خان کے پیروکاروں کا مقصد عوام کی خدمت ہے نہ کہ اقتدار۔باچاخان سے لیکر ولی خان اور اسفندیار خان تک ہمارے اکابرین نے جیلیں کاٹیں، انکا صرف ایک ہی قصور تھا کہ پختونوں کے حقوق کی باتیں کرتے ہیں۔ ووٹ کا حق پختونوں کیلئے باچا خان نے جیتا تھا، یہ ووٹ پختونوں کے پاس ان خدائی خدمتگاروں کی امانت ہے جنہوں نے اذیتیں اور تکالیف برداشت کیں لیکن اپنے موقف اور نظریئے سے پیچھے نہیں ہٹے۔

 

انہوں نےمزيد کہا کہ 31 مارچ کو عوام اے این پی امیدواران کے حق میں اپنے ووٹ کا استعمال کریں گے اور ناااہل حکمرانوں سے اپنی محرومیوں کا بدلہ لیں گے۔ انتخابی جلسے سے مرکزی نائب صدر حسین شاہ خان یوسفزئی، سیکرٹری مالیات سینیٹر حاجی ہدایت اللہ خان، ضلعی صدرو رکن صوبائی اسمبلی حاجی بہادر خان ، تحصیل امیدوار ملک سجاد خان اور دیگر ذمہ داران نے بھی خطاب کیا۔