وانا، مہنگائی اور انٹرنیٹ سروس بندش کیخلاف احتجاجی ریلی

وانا، مہنگائی اور انٹرنیٹ سروس بندش کیخلاف احتجاجی ریلی

وانا ۔۔۔ پاکستان پیپلزپارٹی جنوبی وزیرستان کے زیراہتمام مہنگائی، بے روزگاری، تھری جی اینڈ فور جی کی بندش اور پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں بے پناہ اضافے کے خلاف احتجاجی ریلی نکالی گئی، جس میں پاکستان پیپلز پارٹی کے قائدین، کارکنان کے علاوہ علاقے کے مشران اور نوجوانوں نے کثیر تعداد میں شرکت کی۔

 

احتجاجی ریلی کے دوران عمران مخلص وزیر نے صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ مہنگائی کا جن قابو سے باہر ہوگیا ہے، عمران خان کی جعلی حکومت بری طرح سے ناکام ہوچکی ہے، یہاں آٹا چینی دال کی قیمتیں غریب کی پہنچ سے باہر ہورہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ جنوبی وزیرستان وانا میں یوٹیلیٹی سٹور صرف کاغذات تک محدود ہے۔

 

انہوں نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ انہیں فوری طور پر فعال کیا جائے، کھاد کے حوالے سے بات کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ یہاں سیکورٹی خدشات کا بہانہ بناکر کھاد پر پھر پابندی لگائی ہے، جس سے ایک طرف فصلوں کا نقصان ہورہا ہے۔

 

دوسری طرف وہی کھاد بلیک میں آکر 400 سے 500 روپے مہنگی بیچی جاتی ہے۔

 

اس موقع پر پاکستان پیپلز پارٹی جنوبی وزیرستان وانا کے صدر امان اللہ وزیر نے کہا کہ ایک ریاست دو دستور نامنظور، ہم انٹرنیٹ سروس کی جلد بحالی کا مطالبہ کرتے ہیں، راولپنڈی میںنیوزلینڈ کی ٹیم سیکورٹی خدشات کے پیش نظر میچ کھیلنے سے انکار کردیتی ہے لیکن پھر بھی وہاں انٹرنیٹ سروس معطل نہیں کی جاتی، تو یہاں کیوں؟

 

اُن کا کہنا تھا کہ اگر اگلے جمعہ تک انٹرنیٹ سروس بحال نہ ہوئی تو ایسا عظیم الشان دھرنا دیں گے، جس کی مثال نہ ہوگی۔