پٹرولیم مصنوعات میں اضافہ، حکمران عوام کو بھوک سے مارنا چاہتے ہیں، اسفندیار

پٹرولیم مصنوعات میں اضافہ، حکمران عوام کو بھوک سے مارنا چاہتے ہیں، اسفندیار

پشاور۔۔۔ عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی صدر اسفندیارولی خان نے پٹرولیم مصنوعات اور گیس کی قیمتوں میں اضافے کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ نااہل حکمرانوں نے پاکستان کو مسائلستان بنادیا ہے،ناقص پالیسیوں سے لوگ بھوک سے مرجائیں گے لیکن نااہلوں کو کوئی پرواہ ہی نہیں۔  پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں ہوشربا اضافہ پاکستان کی تاریخ میں پہلی بار دیکھا جارہا ہے۔

 

باچاخان مرکز پشاور سے جاری بیان میں اے این پی سربراہ اسفندیارولی خان نے کہا ہے کہ پٹرولیم مصنوعات کے ساتھ ساتھ ایل پی جی کی قیمتوں میں اضافے سے براہ راست غریب عوام پر بوجھ ڈالا جارہا ہے۔ پاکستانی عوام پہلے ہی غربت کی چکی میں پس رہی ہے اور ایسے میں ہر 15 روز بعد پٹرول بم گرائے جارہے ہیں۔ ڈالر 170 روپے سے متجاوز ہوچکا ہے لیکن وزراء ڈھٹائی سے کہہ رہے ہیں کہ پاکستان کی قیمتیں اب بھی کم ہیں۔

 

ان کا کہنا تھا کہ آئی ایم ایف کی غلامی میں حکمران عوام کو بھول گئے ہیں اور ایسی شرائط پر معاہدے کئے ہیں کہ سارا بوجھ صرف اور صرف عوام پر ڈالا گیا ہے۔ آئی ایم ایف جانے کی بجائے خودکشی کرنیوالا شخص آج وزارت عظمیٰ کی کرسی پر براجمان ہیں۔ جس کو خود کشی کرنی تھی وہ عوام کو فاقہ کشیوں پر مجبور کررہا ہے، موجودہ حکومت کی کوئی سمت نظر نہیں آرہی۔

 

ان کا کہنا تھا کہ پٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں بڑھنے کے بعد بیان دیا گیا کہ ریکارڈ ٹیکس جمع کیا گیا۔ عوام سے ٹیکسز کے نام پر پیسے وصول کئے جارہے ہیں لیکن ریلیف نام کی کوئی چیز نظر نہیں آرہی۔ نااہل حکمرانوں کی غلط پالیسیوں نے عوام کو دو وقت کی روٹی کیلئے ترسا دیا ہے، مزید برداشت کرنے کی طاقت نہیں ہے۔ اضافہ فوری طور پر واپس لیا جائے تاکہ عوام سکھ کا سانس لیں، حکومت کچھ نہیں کرسکتی تو کرسی چھوڑ دیں اور عوام کی حالت پر رحم کریں۔