بونیرمیں شاہراہیں ٹوٹ پھوٹ کاشکار، پی سی1 کینسل کئے گئے، سردار بابک

 بونیرمیں شاہراہیں ٹوٹ پھوٹ کاشکار، پی سی1 کینسل کئے گئے، سردار بابک

پشاور ( نیوز رپورٹر) خیبرپختونخوااسمبلی نے ماہ جولائی کے دوران بارشوں کے نتیجے میں ہونیوالے نقصانات کے ازالے کیلئے متاثرہ اضلاع کی انتظامیہ کی ایک میٹنگ طلب کرلی وزیرخزانہ نے واضح کیاکہ ریلیف کی مد میں کسی بھی انتظامیہ کے پاس پیسوں کی کمی نہیں آنے دینگے.


اسمبلی اجلاس کے دوران اے این پی کے پارلیمانی لیڈرسرداربابک نے کہاکہ بونیرمیں بین الاضلاعی شاہراہیں ٹوٹ پھوٹ کاشکارہوچکی ہیں ڈیپارٹمنٹ نے پی سی ون کینسل کردئیے ہیں کہ یہ اضلاع آفت زدہ ڈکلیئرنہیں ہوئے ری کنسٹرکشن انتہائی ضروری ہے لہذا اس کیلئے فنڈ مختص کیاجائے.

 

صوبائی وزیرخزانہ تیمورجھگڑا نے کہاکہ ایم این آرفنڈپرکوئی سیاست نہیں ہوتی ریلیف کی مد میں تین چارارب روپے پہلے ہی دن ریلیزہوجاتے ہیں بارشوں سے نقصانات کے ازالے کیلئے کام فوری ہوناچاہئے اس حوالے سے انتظامیہ کو پیسے کی کمی نہیں ہوگی چترال سے ڈیرہ تک اورقبائلی اضلاع میں جتنے ترقیاتی کام ہوئے اس سے پہلے کی حکومتوں میں نہیں ہوئے ڈپٹی کمشنرکی ذمہ داری ہے کہ وہ نقصانات کی رپورٹ دے اسکی روشنی میں فنڈریلیزہوگا ہمیں پوراصوبہ عزیزہے ہرکونے میں انوسٹمنٹ کرینگے.

 

سپیکرنے کہاکہ متاثرہ اضلاع کی انتظامیہ اوردیگرمتعلقہ اداروں کی میٹنگ بلالیتے ہیں جے یوآئی رکن عصام الدین نے توجہ دلانوٹس میں کہاکہ جنوبی وزیرستان کی دوتحصیلوں کیلئے یو ایس ایڈکے تعاون سے بجلی بحال ہونی تھی جبکہ چار سے پانچ سال گزرگئے لیکن اسکے باوجود بہت سارے ایسے علاقے ہیں کہ وہاں پرکوئی کام نہیں ہوسکاہے .

 

معاون خصوصی عارف احمدزئی نے کہاکہ 574ملین کایہ پراجیکٹ ہے ماضی میں یہ علاقہ شورش زدہ رہااس لئے کام رکاہواتھااب چونکہ امن قائم ہوچکاہے اوریہ فیڈرل سبجیکٹ ہے اسلئے محرک رکن ساتھ بیٹھ جائیں مطمئن کرادونگاایوان نے مسئلہ سٹینڈنگ کمیٹی کے حوالے کردیا۔

 

ن لیگ کے رکن اورنگزیب تلوٹھانے توجہ دلانوٹس پیش کرتے ہوئے کہاکہ ماہ جولائی میں ایبٹ آبادبری طرح متاثر اوررابطہ سڑکیںپل کوان بارشوں کی وجہ سے شدیدنقصان پہنچاہے حلقہ پی کے37میں انفراسٹرکچر،روڈپل کاکافی نقصان پہنچاہے.

 

ایم پی اے نذیرعباس نے کہاکہ پی کے36میں بھی شاہراہیں بندہیں وزیرمحنت شوکت یوسفزئی نے کہاکہ ایبٹ آباد سمیت نشیبی اضلاع میںبارشوں سے نقصانات ہوئے ہیں ریلیف ایکٹ کے تحت نقصانات کاازالہ کیاجاتاہے لیکن ترقیاتی کام پی ڈی ایم اے کے دائرہ اختیارمیں نہیں آتے متعلقہ ضلعی انتظامیہ کوہدایات دیتاہوں کہ وہ سروے کرکے نقصانات کے حوالے سے رپورٹ حکومت کو بھجوائیں ہم نے عوام کو ہرصورت ریلیف دیناہے سپیکرمشتاق غنی نے کہاکہ ہرگھرمیں پانچ سے پچاس ملین تک نقصان ہواہے ڈی سی کے پاس معلومات ہیں لیکن کوئی دادرسی نہیں ہوئی ہے.