سپریم کورٹ کامتاثرین باچا خان یونیورسٹی کو مارک اپ کیساتھ معاوضے دینے کا حکم

سپریم کورٹ کامتاثرین باچا خان یونیورسٹی کو مارک اپ کیساتھ معاوضے دینے کا حکم

 اسلام آباد (این این آئی)سپریم کورٹ نے باچا خان یونیورسٹی کیلئے زمین ایکوائر کرنے کے کیس میں خیبرپختونخوا حکومت کی پشاور ہائی کورٹ کے فیصلے کیخلاف اپیل مسترد کرتے ہوئے متاثرین کو مارک اپ کے ساتھ معاوضے کی ادائیگی کا حکم دیدیا جبکہ جسٹس قاضی امین نے ریمارکس دیئے ہیں کہ ریاست شہریوں سے زمین لے تو مناسب معاوضہ بھی ادا کرے۔

 

جمعرات کو یہاں جسٹس منصورعلی شاہ کی سربراہی میں 2 رکنی بینچ نے سماعت کی۔دوران سماعت جسٹس قاضی امین نے کہا کہ آئین ہر قسم کے استحصال کی ممانعت کرتا ہے،10 سال میں رئیل سٹیٹ کہاں تک چلا گیا۔

 

جسٹس منصورعلی شاہ نے کہا کہ یونیورسٹی کیلئے 10 سال قبل اراضی ایکوائر ہوئی۔خیبرپختونخوا حکومت کے وکیل نے کہا کہ اپیل مسترد ہوئی تو ایک ارب 50 کروڑ روپے اضافی ادا کرنا پڑیں گے۔صوبائی حکومت کے قانون میں ترمیم کے بعد اصل رقم پر مارک اپ دینا ختم کر دیا گیا ہے۔

 

جسٹس منصورعلی شاہ نے ریمارکس دیئے کہ سپریم کورٹ نے پیسوں کی کائونٹنگ نہیں کرنی،مارک اپ کیساتھ متاثرین کو ادائیگیاں کی جائیں۔

 

بعد ازاںعدالت عظمیٰ نے خیبر پختونخواہ حکومت کی پشاور ہائیکورٹ کے خلاف اپیل مسترد کرتے ہوئے مارک اپ کیساتھ متاثرین کو معاوضہ ادا کرنے کا حکم دیدیا