اللہ کی بادشاہت تمہارے اندر ہے

اللہ کی بادشاہت تمہارے اندر ہے

سلیم شاہ ہوتی ایڈوکیٹ 

اللہ کی بادشاہت تمہارے اندر ہےروسی دانشور لیو ٹالسٹائے (1828-1910) نے اپنی کتاب The kingdom or God is within you میں فلسفہ عدم تشدد اور مزاحمت بلا تشدد پر زور دیا ہے۔ یہ کتاب حضرت عیسیٰ علیہ سلام کے قول پر مرکوز ہے کہ " اگر کوئی ایک گال پر تھپڑ دے تو دوسرا آگے کرو۔" جس کا مفہوم یہ ہے کہ تشدد کا خاتمہ اور انتقام چھوڑ دینا۔ خضرت عیسیٰ علیہ سلام فرماتے ہیں " کہ تم کس طرح کسی انسان کو قتل کرسکتے ہو جب اللہ نے اس کو منع کیا ہے۔" ٹالسٹائے کی تحریروں سے گاندھی  اور ما تھر  لوتھر کنگ بے حد متاثر تھے۔ گاندھی جی اپنی آپ بیتی 'تلاش حق' میں لکھتے ہیں کہ ٹالسٹائے کی کتاب مجھ پر چھا گئی تھی اور مجھ پر اس نے ایک انمٹ نقوش چھوڑے ہیں۔ گاندھی اگے لکھتے ہیں کہ ٹالسٹائے کی کتاب کے علاوہ دو دیگر شخصیات جان رسکن اور شاعر راچندرا بھائی نے بھی ان کی زندگی پر گہرے اثرات کیے ہیں۔ ٹالسٹائے کی کتاب اللہ کی بادشاہت تمہارے اندر ہے روسی زبان میں لکھی گئی ہے جو روس میں پابندی کی وجہ سے 1894 میں جرمنی میں پہلی بار شائع ہو گئی۔  اس وقت گاندھی ساوتھ افریقہ میں مقیم تھے۔ گاندھی اور ٹالسثائے کے مابین   خطوط کا تبادلہ ہوا جو عملی اور مذہبی طور سے عدم تشدد سے متعلق رہے۔   کتاب نے سماجی حقوق تحریک کے مبلغ جیمز بیول پر بھی گہرے اثرات مرتب کیے۔ اس کی کتاب پڑھنے کے بعد انھوں نے امریکی نیوی چھوڑ دی اور کہا کہ وہ اس قاپل نہیں کہ کسی دوسرے انسان کو قتل کرے۔ حضرت عیسی  نے کہا کہ " اللہ کی بادشاہت ( جنت) تمہارے اندر ہے۔ ان الفاظ کا مطلب ہے کہ باہر دیکھنے کے بجائے اپنے اندر دیکھو تو تم کو جنت اور روشنی مل جائیں گے۔ یہ تمہارے اندر ہے۔ تمہارے دل میں، تمہاری ذات کی تڑپ، جو کہ تمہارے روح میں ہے، وہ ہمیشہ وہاں رہتا ہے جو تم دیکھنا چاہتے ہو تم کو دکھتا ہے۔ اس لئے وہ عدم تشدد اور پرامن اللہ کی  بادشاہت ہے۔  اس شہرہ آفاق ناول وار اینڈ پیس نے اس کو شہرت کی بلندیوں پر پہنچایا۔ یہ ناول نپولین کی 1812 روس پر حملہ کے تناظر میں لکھا گیا ہے۔  یہ ناول روحانیت اور خاندان کی خوشحالی سے متعلق ہے۔ یہ ناول حقیقت پسندی کی وجہ سے مشہور ہے۔ وسیع ریسرچ کے بعد یہ ناول لکھا گیا ہے۔ انہوں نے میدان جنگ کے دورے کرکے اور  تاریخی کتب جو کہ نپولین  کے کام سے متعلق تھے ان کا مطالعہ کیا اور پھر اصل حالات پر ناول لکھ کر ایک جاندار تاریخ مرتب کی ہے۔ ان کا دوسرا ناول Resurrection  ہے جس میں انہوں نے انسان کے بنائے ہوئے  قوانین کی ناانصافی کا پردہ چاک کیا ہے۔ وہ جارجزم کے معاشی فلسفہ کے زبردست حامی تھے۔ ٹالسٹائے کی تحریروں میں انسانیت، روحانیت، امن اور محبت کا درس عیاں ہے۔