عمران خان کا بوریا بستر جلد گول ہونے والا ہے،  حیدر ہوتی 

عمران خان کا بوریا بستر جلد گول ہونے والا ہے، حیدر ہوتی 

نوشہرہ ( نمائندہ شہباز) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی سینئر نائب صد امیر حیدر خان ہوتی نے کہا ہے کہ بہت جلد عمران خان کا بوریا بستر گول ہونے والا ہے‘پی ٹی آئی اور حکومت دونوں کی کشتی میں کب کے سوارخ ہوچکا ہے‘اب دیکھنا یہ کہ وہ از خود مستعفی ہو کر قوم پراحسان کریں گے یا سیاسی شہادم کی جام نوش کرکے خود کو اور اپنی حکومت کو عوامی غیض و غضب سے بچانے میں ناکام کوشش کریں گے کیوں کہ جو لوگ ان کو لائے تھے وہ بھی انکی نالائقوں سے تنگ آچکے ہیں۔

 

آئی ایم ایف کو خوش کرنے اور 170ارب روپے کے قرضے کیلئے عوام پر 332ارب روپے منی بجٹ کی آڑ میں ٹیکسز کی صورت میں بوجھ ڈالا جا رہا ہے‘ان بھاری ٹیکسز کی نفاذ سے ملک میں مہنگائی کا طوفان برپا ہوجائیگا اور مہنگائی کا برپا ہونے والا یہی طوفان ہی عمران خان حکومت کے جانے کا پیش خیمہ ثابت ہوگا۔

 

ان خیالا ت کا اظہار انہوں نے نوشہرہ میں عوامی نیشنل پارٹی کے ایگزیکٹیو کونسل کے رکن میاں یحییٰ شاہ کا کا خیل کی رہائشگاہ پر بلدیاتی انتخابات کے دوران تحصیل نوشہرہ کے کارکنوں کی شبانہ روز کوششوں کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کیا۔

 

اس موقعہ پر میاں یحییٰ شاہ کاکاخیل‘تحصیل نوشہرہ کے نظامت کے امیدوار میاں بابر شاہ کاکاخیل‘عوامی نیشنل پارٹی کے ضلعی صدر جمال خان خٹک اور جنرل سیکرٹری انجینئر حامد خان نے بھی خطاب کیا جبکہ تقریب میں سابق مشیر وزیر اعلیٰ سید معصوم شاہ‘میاں شعیب باچا‘تحصیل نوشہرہ کے صدر زاہد خان سمیت عوامی نیشنل پارٹی نوشہرہ کی ضلعی‘تحصیل اور مقامی تنظیموں کے عہدیداروں ا ور کارکنوں نے شرکت کی۔

 

امیر حیدر خان ہوتی نے مزید کہا کہ کئی عرصہ قبل آل پارٹی کانفرنس نے ملک کو درپیش چیلنجز کے بارے میں جو نکات پیش کئے تھے اگر اس پر عمل کیا جاتا تو آج ملک گوناگوں مسائل کا شکار نہ ہوتا۔

 

انہوں نے مزید کہا کہ اگر عمران خان کے پاس مسائل کا حل موجود نہ تھا تو انہوں نے قوم کو سبز باغ دکھائے کیوں؟جو آج 3سال کا عرصہ گزرنے کے بعد کہہ رہا ہے کہ اپوزیشن حل بتا دے‘ اپوزیشن کے پاس تو ان تمام مسائل کا حل یہی ہے کہ عمران خان ایک اچھے بچے کی طرح ہیڈ ماسٹر کی بات مان کر سیدھا اپنے گھر کا راستہ لیں، اپوزیشن اور بالخصوص عوامی نیشنل پارٹی کسی بھی غیر جمہوری، غیر آئینی متبادل کے حق میں نہیں۔

 

انہوں نے مزید کہا کہ سانحہ مری ایک دل خراش اور افسوس ناک واقعہ ہے لیکن ایک طرف معمول سے زیادہ بارشیں ہو رہی تھیں تو دوسری طرف حکومتی وزراء سیاحوں کو مری آنے کی ترغیب دے رہے تھے‘البتہ حکومتی انتظامات کچھ بھی نہیں‘کیوں وہاں پر سیاحوں کے ساتھ جو کچھ ہوا وہ مجرمانہ غفلت سب کے سامنے ہے‘ہمیں سانحہ مری کے حوالے سے حکومتی تحقیقات پر اعتماد نہیں‘ہم مطالبہ کرتے ہیں کہ سانحہ مری کی عدالتی تحقیقات ہونی چاہئیں اور عدلیہ ہی غفلت برتنے والوں کو سزائیں دیں۔