کراچی سرکلر ریلوے؛ سپریم کورٹ نے وزیراعلیٰ سندھ کو توہین عدالت کا نوٹس جاری کردیا

کراچی سرکلر ریلوے؛ سپریم کورٹ نے وزیراعلیٰ سندھ کو توہین عدالت کا نوٹس جاری کردیا

اسلام آباد: کراچی سرکلر ریلوے (کے سی آر) سے متعلق کیس میں سپریم کورٹ نے وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کو توہین عدالت کا نوٹس جاری کردیا۔

چیف جسٹس کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے تین رکنی بینچ نے کراچی سرکلر ریلوے کیس کی سماعت کی تو ڈی جی ایف ڈبلیو او عدالت میں پیش ہوئے۔

فرنٹیئر ورکس آرگنائزیشن (ایف ڈبلیو او) کے وکیل نے کہا کہ سندھ حکومت انڈر پاسز کا ٹھیکہ ہمیں نہیں دے رہی۔ چیف جسٹس نے ڈی جی سے سوال کیا کہ کیا ایف ڈبلیو او کو ٹھیکہ ملا ہے؟۔ ڈی جی ایف ڈبلیو او نے جواب دیا کہ تاحال ہمیں کوئی ٹھیکہ نہیں ملا۔

دورانِ سماعت چیف جسٹس پاکستان جسٹس گلزار احمدنے کہاکہ سرکلر ریلوے کاکام 2 ماہ میں مکمل ہوجانا چاہیے تھا کیونکہ صرف اوور ہیڈ برج اور تھوڑاسا کام ہے،لہٰذاایف ڈبلیو او نے سرکلر ریلوے کا کام شروع کیوں نہیں کیا؟

عدالتی استفسار پر ڈی جی ایف ڈبلیو او نے بتایا کہ ہم نے ڈیزائن بنا کردیا تھا لیکن سندھ حکومت نے تاحال منظورنہیں کیا۔

عدالت نے سرکلر ریلوے سے متعلق عدالتی احکامات پر عملدرآمد نہ کرنے پر وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کو توہین عدالت کا نوٹس جاری کیا۔

سپریم کورٹ نے وزیراعلیٰ سندھ کو 2 ہفتوں میں توہین عدالت نوٹس کا جواب جمع کرانے کا حکم دیا ہے۔

بعد ازاں عدالت نے کیس کی مزید سماعت 2 ہفتوں کے لیے ملتوی کردی۔