شمالی وزیرستان میں دہشتگردوں کا چیک پوسٹ پر حملہ، پاک فوج کا جوان جاں بحق 

شمالی وزیرستان میں دہشتگردوں کا چیک پوسٹ پر حملہ، پاک فوج کا جوان جاں بحق 

شمالی وزیرستان۔۔۔ صوبہ خیبر پختونخوا کے قبائلی ضلع شمالی وزیرستان میں  چیک پوسٹ پر دہشتگردوں کے حملے میں پاک فوج کا جوان جاں بحق ہوگیا۔ 

 

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ ( آئی ایس پی آر) کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ  دہشت گردوں نے شمالی وزیرستان کےگڑیوم میں چیک پوسٹ کو نشانہ بنایا، جس کے نتیجے میں پاک فوج کا جوان جاں بحق ہوگیا۔ 

 

 آئی ایس پی آر کے مطابق فائرنگ کے نتیجے میں 37 سالہ نائیک غلام مصطفی  جاں بحق  ہو گیا۔ جاں بحق اہلکار غلام مصطفی کا تعلق مظفر آباد سے ہے۔

 

آئی ایس پی آر نے بتایا کہ  اس فائرنگ کے نتیجے میں پاک فوج نے بھرپور جوابی کارروائی کی۔

 

آئی ایس پی آر کے مطابق دہشتگردوں کے خاتمے کے لیے سکیورٹی فورسز کا آپریشن جاری ہے۔

 

یاد رہے کہ 17 جولائی کو نجی ٹی وی کو انٹرویو دیتے ہوئے ترجمان پاک فوج میجر جنرل بابر افتخار نے کہا تھا کہ پاک افغان سرحد پر تمام غیر قانونی کراسنگ پوائنٹس سیل کردیے گئے ہیں جبکہ سرحد پر باقاعدہ طور پر فوجی دستے تعینات کر دیئے گئے ہیں۔

 

بابر افتخار نے کہا تھا کہ پاک فوج کے ریگولر دستے پاک افغان سرحد پر پٹرولنگ کر رہے ہیں اور بارڈر پر غیر قانونی کراسنگ پوائنٹس کو سیل کر دیا گیا ہے۔ دہشت گردی کے حالیہ واقعات کی کڑیاں افغانستان سے ملتی ہیں کیونکہ افغانستان کی حالیہ صورتحال کے باعث وہاں پر دہشت گرد شدید دبائو میں ہیں۔ یکم مئی 2021ء کے بعد 167 دہشت گردی کے حملوں کی اطلاعات پر پاک فوج نے معلومات (آئی بی او) کی بنیاد پر 7 ہزار سے زیادہ آپریشنز کئے ہیں جن میں مختلف علاقوں کی تلاشی سمیت دیگر کارروائیاں شامل ہیں۔

 

ڈی جی آئی ایس پی آر نے واضح کیا کہ ہم افغانستان میں امن عمل کے ضامن نہیں ہیں کیونکہ افغانستان کے شراکت دار ہی اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکتے ہیں۔ پاکستان میں امن و امان افغانستان کے امن سے منسلک ہے۔ ہم باریک بینی سے علاقائی صورتحال کا جائزہ لے رہے ہیں اور افغان امن عمل میں مخلصانہ کردار ادا کر رہے ہیں۔ ہم افغانستان میں امن و امان کی بحالی کیلئے تمام شراکت داروں کے مابین مذاکرات کے عمل کیلئے ہم نے ہر طرح کے ممکنہ اقدامات کئے ہیں۔