خیبر پختونخوا میں صحت یابی کے بعد کورونا سے دوبارہ متاثر ہونے کا پہلا کیس

ایبٹ آباد(نمائندہ شہباز) خیبر پختونخوا کےضلع ایبٹ آباد کے ایوب میڈیکل کالج کے تحقیقی جریدے میں شائع ہونے والی تازہ ترین تحقیق میں کہا گیا ہے کہ کووڈ-19 کی دوسری لہر کے دوران صحت یاب ہونے والا ایک شہری دوبارہ وائرس کا شکار ہوگیا جو اس نوعیت کا پہلا واقعہ ہے۔

تفصیلات کے مطابق خیبرپختونخواہ کے ایوب میڈیکل کالج حکام کے مطابق 41 سالہ سرکاری ملازم میں صحتیاب ہونے کے 4 ماہ بعد دوبارہ مہلک وبا کی تشخیص ہوئی ہے ، مریض کے جسم میں اینٹی باڈیز ختم ہو چکی تھیں۔

مزید بتایا گیا ہے کہ اس مریض کو جون میں کرونا وائرس کی تشخیص کے بعد ہسپتال داخل کیا گیا تھا جہاں کچھ روز زیر علاج رہنے کے بعد اس نے وبا کو شکست دے دی تھی تاہم اب جب دوبارہ اس شخص کو ہسپتال لایا گیا تو ٹیسٹ کرنے پر مریض میں کورونا وائرس کی تشخیص ہوئی ہے ۔

مریض کی شناخت کے حوالے سے تفصیلات جاری نہیں کی گئیں۔

ایوب میڈیکل کالج ریسرچرز کا کہنا ہے کہ ہم سمجھتے ہیں کہ پاکستان میں یہ پہلا ڈاکومینٹڈ ری انفیکشن کا کیس ہے، جو سامنے آیا ہے اور جسے ہم نے باقاعدہ طور تحقیقی مقالے کی شکل دی ہے۔

یہ بھی پڑھیں

حکومت نے طالبان سہولت کار کمیشنر کو پبلک سروس کمیشن کا رکن بنا دیا، سردار حسین بابک

خیبر پختونخوا کے وسائل سے پوراپاکستان چل رہا ہے لیکن صوبے کے عوام اپنے بنیادی …