خیبرپختونخوا میں پولیو کا ایک اور کیس سامنے آگیا

خیبرپختونخوا میں پولیو کا ایک اور کیس سامنے آگیا

پشاور(ویب ڈسک) خیبرپختونخوا کے ضلع ٹانک سے پولیو کا نیا کیس سامنے آیا ہےجس کے بعد رواں سال اب تک خیبر پختونخوا سے پولیو کیسز کی تعداد 3 ہوگئی ہے۔

ایمرجنسی آپریشن سینٹر کے مطابق ٹانک کے 11 ماہ کے بچے میں پولیو وائرس کی نشاندہی کی گئی ہے۔ متاثرہ بچے کے نمونے 11 جنوری کو تصدیق کے لئے لیباریٹری بھیجے گئے تھے. بچے کے بارے میں بتایا جارہا ہے کہ اس کو حفاظتی ٹیکے بھی نہیں لگوائے گئے تھے۔

رواں سال اب تک خیبر پختونخوا سے پولیو کیسز کی تعداد 3 ہوگئی ہے.جن میں دو پولیو کیسز لکی مروت سے رپورٹ کئے گئے ہیں.

گزشتہ سال صوبے میں 92 متاثرہ کیسز کو رپورٹ کیا گیا ہے. سب سے زیادہ متاثرہ بچوں کا تعلق ضلع لکی مروت اور بنوں سے تھا جہاں سے بالترتیب 32 اور 26 کیسز رپورٹ ہوئے ہیں۔

دوسری جانب خیبرپختونخوا میں بروقت ویکسین نہ ملنے کے باعث تاخیر کا شکار ہونے والی سہہ روزہ انسداد پولیو مہم باضابطہ صوبےکے 15 اضلاع میں شروع کردی گئی ہے۔ سہہ روزہ انسداد پولیو مہم 27 جنوری کو ہونی تھی جس کو عارضی طور پر موخر کیا گیا تھا۔

ایمرجنسی آپریشن سینٹر خیبرپختونخوا کے مطابق انسداد پولیو مہم پشاور سمیت چارسدہ، خیبر، ملاکنڈ، مردان، نوشہرہ، صوابی، بونیر، سوات، مہمند، باجوڑ، بنوں، کوہاٹ، لکی مروت اور تورغر میں تین دن تک جاری رہے گی۔

مہم کے دوران 40 لاکھ سے زائد بچوں کو پولیو سے بچاؤ کے قطرے پلانے کا ہدف رکھا گیا ہے جس کیلئے 12ہزار 73 ٹیمیں تشکیل دی گئی ہیں. جب کہ مہم کی موثر نگرانی کے لئے 12 ہزار 766 لیڈی ہیلتھ ورکرز بھی مہم میں حصہ لے رہی ہیں.

ایمرجنسی آپریشن سنٹر خیبرپختونخوا کے مطابق انسداد پولیو مہم 27 جنوری کو شروع کی جانی تھی جوکہ وفاق سے ویکسین نہ پہنچنے پر ملتوی کرنا پڑی تھی جسے آج سے شروع کردیا گیا اور تین دن تک جاری رہے گی

Google+ Linkedin

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

*
*
*