باڑہ دھرنا ختم، سی ٹی ڈی اہلکاروں کیخلاف مقدمے کا اندراج اور دیگر مطالبات منظور

8روز تک ضلع خیبر اور منگل کے روز خیبرپختونخوا اسمبلی کے باہر احتجاج کے بعد کمشنر پشاور کا قتل میں ملوث اہلکاروں کیخلاف مقدمہ، لاپتہ افراد کو عدالت میں پیش کرنے ، سی ٹی ڈی کی کارروائیاں روکنے کی یقین دہانی

پشاور؍باڑہ (سٹاف رپورٹر؍نمائندہ شہباز)پشاور کے علاقہ متنی میں ضلع خیبر سے تعلق رکھنے والے سکول ٹیچر عرفان اللہ آفریدی کی ماورائے عدالت قتل کیخلاف گزشتہ 7روز سے باڑہ خیبر چوک میں دھرنا دیئے لواحقین اور علاقہ مکینوں نے حکومتی رویئے کیخلاف منگل کے روز صوبائی اسمبلی کا رخ کیا اور اسمبلی چوک میں احتجاجی مظاہرہ کیا، مظاہرے کی قیادت باڑہ سیاسی اتحاد کے قائدین کررہے تھے جبکہ مظاہرین نے ہاتھوں میں بینرز اور پلے کارڈر اٹھا رکھے تھے جن پر ان کے مطالبات کے حق میں نعرے درج تھے۔

شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے جماعت اسلامی کے شاہ فیصل آفریدی، جمعیت علماء اسلام کے رہنما شمس الدین آفریدی، ممبر صوبائی اسمبلی محمد شفیق آفریدی اور دیگر نے کہا کہ عرفان اللہ شہید کو انصاف دیا جائے اور قتل کی ایف آئی آر درج کی جائے،ضلع خیبر کہ عوام نے امن کے قیام کے لئے فوجی آپریشن اور آپریشن کے بعد بڑی قربانیاں دی ہیں تاہم اب ان کے ساتھ ایسا سلوک روا رکھنا ظلم اور بربیت ہے تعلیم یافتہ نوجوان جس کی نوکری کا سرکاری لیٹر گھر آ گیا تھا اس کے باوجود کمزور اور غریب والد کے سہارے عرفان اللہ آفریدی کو اغواء کے بعد قتل کرکے اس کی لاش پشاور کے علاقے متنی میں پھینک دی گئی جس کی تحقیقات کی جائے اور خاندان اور یتیم بچوں کو انصاف فراہم کیا جائے ۔

دریں اثناء باڑہ سیاسی اتحاد کے ترجمان چراغ آفریدی نے میڈیا کو تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ عرفان اللہ آفریدی کی ماورائے عدالت قتل کے خلاف احتجاجی دھرنے کے قائدین کے نمائندہ وفد اور کمشنر پشاور کے مابین مذاکرات ہوئیں، جوکہ کامیاب ہوگئے اور باڑہ سیاسی اتحاد کے تمام مطالبات مان لئے گئے۔مطالبات میں عرفان اللہ شہید کے قتل کی ایف آئی آر درج کرنا، مقتول کو شہید قرار دے کر ان کے قتل میں ملوث اہلکاروں کو قانون کے مطابق سزا دی جائیگی، پشاور و دیگر اضلاع کے سول و سکیورٹی اداروں کو ضلع خیبر میں از خود کارروائی سے روکا جائے گا اور ضلع خیبر سے تعلق رکھنے والے تمام لاپتہ افراد کو عدالت میں پیش کرکے ماورائے عدالت قتل بند کردیا جائے گا شامل تھے۔ممبر صوبائی اسمبلی محمد شفیق آفریدی نے باڑہ سیاسی اتحاد اور کمشنر پشاور کے درمیان ضامن کا کردار ادا کیا۔

باڑہ سیاسی اتحاد کے ترجمان چراغ آفریدی نے دھرنے میں شرکت کرنے والے ضلع خیبر اور تمام خیبرپختونخوا کے غیور عوام کا تہہ دل سے شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ اس مشکل وقت میں آپ نے ہمارا ساتھ دیا۔

انہوں اس عزم کا اظہار کیا کہ آئندہ بھی ظلم کیخلاف چپ نہیں بیٹھیں گے۔یاد رہے کہ 8 دن سے جاری احتجاجی دھرنا آج بروز بدھ باڑہ خیبر چوک میں اختتامی دعا کے ساتھ ختم کیا جائے گا جس کے بعد متعلقہ حکام فاتحہ خوانی کیلئے شہید عرفان اللہ کے گھر جائیں گے۔

یہ بھی پڑھیں

ضم اضلاع میں مقامی تنازعات،اے این پی نے کمیٹی تشکیل دے دی

رکن صوبائی اسمبلی نثارمومند چیئرمین ،مثل خان اورکزئی سیکرٹری مقرر ،دیگراراکین میں شیخ جہانزادہ، شاہ …