آزاد پریس ہمارا مطالبہ ،جاری جدوجہد کا ہم بھی حصہ ہیں،ایمل ولی خان

پشاور(نیوز رپورٹر) عوامی نیشنل پارٹی خیبرپختونخوا کے صدر ایمل ولی خان نے کہا ہے کہ صحافت کی آزادی کی جنگ دراصل ان پسماندہ علاقوں میں لڑی جاتی ہے جن کی ہر ایک خبر کی لاٹھی گولی کی سرکار انتہائی شدید تلاشی لیتی ہے۔

سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر صحافت کی آزادی کے عالمی دن کے موقع پر جاری پیغام میں اے این پی کے صوبائی صدر کا کہنا تھا کہ آج صحافت کی آزادی کا عالمی دن ہے۔ کیا پختونخوا اور بلوچستان کے وہ درجنوں صحافی کسی کو یاد ہیں جو تاریک راہوں میں مارے گئے؟ یہ اعتراف ضروری ہے کہ پریس کی آزادی کی جنگ اصل میں ان پسماندہ علاقوں میں لڑی جاتی ہے جن کی ہر ایک خبر کی لاٹھی گولی کی سرکار انتہائی شدید تلاشی لیتی ہے۔

انہوں نے صحافیوں کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ وہ صحافی جو واٹس ایپ پر ملنے والی ہدایات قبول کرنے سے انکار کرتے ہیں۔ کم ہوں گے لیکن ہیں ضرور، ہم جانتے ہیں ان میں سے کچھ باضمیر جو سرکاری اشرافیہ کے تعلقات کی بجائے قلم کے تقدس کو زیادہ اہمیت دینے کے جرم میں زیرعتاب رہے، بے روزگار رہے لیکن ان کو خراج تحسین پیش کرتے ہیں۔

ایمل ولی خان کا مزید کہنا تھا کہ اس پریس کا کیا کیا جائے جس میں کسی جبری گمشدگی،ٹارگٹ کلنگ، زمین پر قبضے، دہشت گردوں کی نقل و حرکت، مسجدوں میں فساد کیلئے چندے، ماورائے آئین اقدامات یا اس نوعیت کے بڑے سنگین مسائل کی خبر تک نہیں آسکتی۔ آزاد پریس ہمارا مطالبہ بھی ہے اور اس کیلئے جاری جدوجہد کا ہم حصہ بھی ہیں۔

یہ بھی پڑھیں

پی ڈی ایم میں پیپلزپارٹی کی واپسی اور اتحاد دوبارہ فعال کرنےکی تیاریاں

پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے پی ڈی ایم …