ماں کے دودھ میں کورونا وائرس رہ جانے کے شواہد نہیں ملے

کورونا میں مبتلا مائیں نوزائیدہ بچوں کو دودھ پلاسکتی ہیں، سربراہ عالمی ادارہ صحت

جنیوا ( آن لائن )عالمی ادارہ صحت (ڈبلیو ایچ او) نے کہا ہے کہ کورونا وائرس میں مبتلا مائیں اپنے نوزائیدہ بچوں کو دودھ پلاسکتی ہیں۔اگرچہ پہلے بھی عالمی ادارہ صحت سمیت اقوام متحدہ کی بچوں سے متعلق ذیلی تنظیم یونیسیف کے علاوہ دیگر عالمی اداروں کے ماہرین بھی کہہ چکے تھے کہ کورونا کے خوف سے مائیں بچوں کو دودھ پلانا بند نہ کریں۔

تاہم یہ پہلا موقع ہے کہ عالمی ادارہ صحت نے واضح طور پر کہا ہے کہ کورونا کا شکار ہونے والی مائیں بھی بچوں کو دودھ پلاسکتی ہیں۔ غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق عالمی ادارہ صحت کے سربراہ ٹیدروس ایڈہانوم نے دیگر عہدیداروں کے ساتھ 12 جون کو ورچوئل پریس بریفنگ کے دوران واضح کیا کہ اب تک کی تحقیق سے پتا چلا ہے کہ ماؤں کے دودھ میں کورونا موجود نہیں رہتا۔

عالمی ادارہ صحت کے سربراہ کا کہنا تھا کہ کورونا میں مبتلا نئی ماؤں کو نوزائیدہ بچوں کو لازمی طور پر اپنا دودھ پلانا چاہیے اور انہیں اپنے بچوں سے الگ بھی نہیں کیا جانا چاہیے۔

یہ بھی پڑھیں

افغان حکومت کا 600انتہائی خطرناک طالبان قیدیوں کو رہا کرنے سے انکار

ان600میں قتل، ہائی وے ڈکیتی میں ملوث ملزمان کے ساتھ سینکڑوں غیر ملکی جنگجو شامل …