کورونا پر اجلاس، وزیراعظم کی غیرسنجیدگی بدستور قائم، عمران خان اپوزیشن کیساتھ بیٹھنے کو تیار نہیں

اسلام آباد (ایجنسیاں) کورونا وائرس کے حوالے سے بذریعہ ویڈیو لنک ہونے والے پارلیمانی رہنمائوں کے اجلاس سے وزیراعظم عمران خان کے اٹھ کر جانے پر حزب اختلاف نے بھی بائیکاٹ کردیا۔سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کی زیر صدات قومی اسمبلی اور سینیٹ میں پارلیمانی رہنمائوں کا اجلاس بذریعہ ویڈیو لنک ہوا جس سے وزیراعظم عمران خان نے بھی خطاب کیا۔

کانفرنس کے دوران ہی وزیر اعظم عمران خان اٹھ کر چلے گئے جس پر قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف شہباز شریف اور پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے واک آٹ کیا۔ اس موقع پر شہباز شریف کا کہنا تھا کہ وزیراعظم کی سنجیدگی کا یہ عالم ہے کہ اجلاس میں بیٹھنا تک گوارا نہیں کیا، پاکستان کو تاریخ کی سب سے بڑی وبا کا سامنا ہے اور وزیراعظم موجود نہیں، اگروزیراعظم کی یہ سنجیدگی ہے تو ہم اجلاس میں نہیں بیٹھیں گے۔

انہوں نے کہا کہ وزیراعظم کو اتنا بھی احساس نہیں کہ یہ مشاورتی اجلاس ہے، ہم یہاں سیاست کرنے تو نہیں آئے، یہ سوچنے بیٹھے ہیں کہ مل کر قوم کو کیسے بچائیں۔ویڈیو کانفرنس میں پیپلزپارٹی کی جانب سے بلاول بھٹو اور شیری رحمان نے شرکت کی جب کہ ن لیگ کی جانب سے شہبازشریف، مشاہداللہ خان اور خواجہ آصف شریک ہوئے۔

پارلیمانی لیڈرز سے ویڈیو لنک کے ذریعے خطاب میں وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ چین میں زیر تعلیم پاکستانی طلبا کو چین میں رکھنے کا مشکل فیصلہ کیا، جس کی وجہ سے چین سے ابھی تک ایک بھی کورونا وائرس کا کیس پاکستان میں نہیں آیا۔انہوں نے بتایا کہ کل تک پاکستان میں کورونا وائرس کے 900 مریض تھے جس میں سے صرف 153 کورونا وائرس کے مقامی مریض ہیں جب کہ اب تک پاکستان آنے والے 9 لاکھ سے زائد افراد کی ائیر پورٹ پر اسکریننگ کی جا چکی ہے۔

اجلاس کے دوران خطاب کرتے ہوئے جمعیت علمائے اسلام (جے یو آئی) ف کے رہنما مولانا عبد الغفور حیدری کا کہنا تھا کہ ملک میں اب تنقید، سیاست کا وقت نہیں، قومی سلامتی کی بات ہے۔ پاکستان میں ہم سب نے ملکر کورونا وائرس سے نجات حاصل کرنی ہے۔

پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے وزیراعظم عمران خان سے کورونا وائرس سے متعلق پالیسیوں پر نظر ثانی کا مطالبہ کردیا۔کراچی سے بذریعہ ویڈیو لنک پریس کانفرنس کرتے ہوئے بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ وفاق کو ایسے اقدامات اٹھانے چاہئیں جس سے وبا کا پھیلا کم ہو ،کورونا مزید پھیل گیا تو اس پرقابو نہیں کرسکیں گے۔

بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ وزیراعظم نے جو اقتصادی پیکج کا اعلان کیا ہے وہ کافی نہیں، ہمیں غریب عوام کی صحت اور معاشی صورتحال کا خیال رکھنا ہے۔بلاول بھٹو زرداری کا کہنا تھا کہ قرنطینہ مراکز، وینٹی لیٹرز اور طبی عملیکی تعداد کو بڑھاناہوگا،سندھ حکومت نے کورونا وائرس کی ٹیسٹنگ کے لیے روزانہ 100 کِٹس کی گنجائش کو بڑھا کر 200 تک پہنچا دیا ہے جو آئندہ دنوں میں مزید 4 ہزار کِٹس تک بڑھ جائی گی۔ان کا مزید کہنا تھا کہ ہم سب کو مل کر مشکل فیصلے لیناہوں گے،سنجیدہ اقدامات نہ کیے گئے تو صرف لاک ڈان کا کوئی فائدہ نہیں ہوگا اور اس کا ناقابلِ تلافی نقصان اٹھانا پڑے گا۔

یہ بھی پڑھیں

لیک ویڈیو نشر کرنے پر چیئرمین نیب نے غصے میں میر شکیل کوگرفتار کروایا،اعتزاز احسن

لاہور(ویب ڈیسک) جنگ اور جیو کے ایڈیٹر انچیف میر شکیل الرحمان کے وکیل بیرسٹر اعتزاز …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔