وفاقی حکومت کا زیادتی کے مجرموں کو سخت سزائیں دینے کیلئے آرڈیننس لانے کا فیصلہ

اسلام آباد: وفاقی حکومت نے زیادتی کے مجرموں کو سخت سزائیں دینے کیلئے آرڈیننس لانے کافیصلہ کیاہے،فیصلہ وزیراعظم کی زیرصدارت قانونی ٹیم کے اجلاس میں کیاگیا،مجرموں کو سخت سزائیں دینے کا آرڈیننس آئندہ کابینہ اجلاس میں پیش ہونے کا امکان ہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت قانونی ٹیم کااجلاس ہوا جس میں وزیرقانون فروغ نسیم اور وزیر انسانی حقوق شیریں مزاری نے شرکت کی۔

اجلاس میں زیادتی کے مجرمان کو سخت سزا کے طریقے کار سے متعلق آگاہی دی گئی ،اس کے علاوہ گواہوں کے تحفظ کے طریقہ کار سے متعلق بھی آگاہی دی گئی ۔

یہ بھی پڑھیں: پشاور میں ایک اور بچی درندگی کا شکار، جلی ہوئی نعش برآمد

وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ زیادتی کے مجرموں کے خلاف سخت قانون لایا جائے، ایسا قانون لائیں کہ مثاثرہ خواتین یا بچے اپنی شکایات درج کرا سکیں، قانون میں متاثرہ خواتین و بچوں کی پرائیویسی کے تحفظ کا خیال رکھا جائے،ہم نے اپنے معاشرے کو محفوظ ماحول دینا ہے۔

اس خبر کو بھی پڑھیں: بونیر، 10سالہ بچی کی ذبح شدہ نعش برآمد، متعدد مشتبہ افراد گرفتار

وزیراعظم نے کہا کہ زیادتی کے واقعات کی روک تھام ہر صورت یقینی بنانی ہوگی،سنگین نوعیت کے معاملے پر ایک لمحے کی تاخیر بھی نقصان دہ ہے ،دن رات کام کریں لیکن معاملے کو منطقی انجام تک پہنچائیں۔

وزیراعظم نے کہاکہ فاسٹ ٹریک مقدمات کے ذریعے انصاف فراہمی یقینی بنائی جائے ۔

یہ بھی پڑھیں

ایم ٹی آئی آرڈیننس،نجکاری کے ذریعے اپنوں کو نوازا جارہا ہے، میاں افتخار

نوکریاں دینے والوں نے پاکستان سٹیل ملز میں 4500، ریلوے میں 6000افراد کو بے روزگار …