قومی اسمبلی میں حکومت سادہ اکثریت ثابت کرنے میں ناکام ہو گئی

اسلام آباد((آئی این پی)قومی اسمبلی میں حکومت سادہ اکثریت ثابت کرنے میں ناکام ہو گئی،حکومت نے عددی اکثریت پر بجٹ منظور کروایا، حکومت کو سادہ اکثریت کیلئے172ووٹ درکار تھے جبکہ حکومت صرف 160ووٹ حاصل کرسکی۔بجٹ منظوری کے اہم موقع پر حکومت کے 12،اتحادی شیخ رشید احمد ،جی ڈی اے کے غوث بخش مہر،ایم کیو ایم کے اقبال محمد علی اور مسلم لیگ)ق(کی خاتون رکن غیر حاضر رہیں۔اپوزیشن کے بھی 161میں سے42ارکان غیر حاضر رہے، حیران کن طور پر فنانس بل پر ووٹنگ کے دوران 15ارکان نے پارلیمنٹ میں موجود ہونے کے باوجود ووٹنگ میں حصہ نہ لیا۔

پیر کو قومی اسمبلی کا اجلاس سپیکر اسد قیصر کی زیر صدارت ہوا جس میں فنانس بل 2020-21کی منظوری دی گئی ۔ قومی اسمبلی سیکرٹریٹ کی جانب سے جاری حاضری کے مطابققومی اسمبلی کے اہم اجلاس میں 342ارکان پر مشتمل ایوان میں 294ارکان نے شرکت کی جبکہ 46ارکان غیر حاضر رہے ۔بجٹ کی منظوری کے دوران حکومت نے160جبکہ اپوزیشن نے119ووٹ حاصل کئے۔

اہم اجلاس میں پاکستان پیپلزپارٹی کے آصف علی زرداری سمیت11،پاکستان مسلم لیگ (ن) کے شہباز شریف سمیت 13،ایم ایم اے کے 4،اے این پی کے امیر حیدر خان ہوتی، بی این پی مینگل کے سربراہ سردار اختر مینگل غیر حاضر رہے جبکہ پاکستان تحریک انصاف کے 12،حکومتی اتحادی شیخ رشید احمد ، جی ڈی اے کے غوث بخش مہر، ایم کیو ایم کے اقبال محمد علی اورپاکستان مسلم لیگ (ق) کی خاتون رکن مسز فرخ خان غیر حاضر رہیں ۔

یہ بھی پڑھیں

مقبوضہ کشمیر میں سربرینکا کی طرز پر نسل کشی کا خطرہ ہے، عمران خان

8 لاکھ بھارتی فوج نے 80 لاکھ کشمیریوں کا محاصرہ کر رکھا ہے، عالمی برادری …