اسلام آبادہائیکورٹ کا آصف زرداری کیلئے میڈیکل بورڈ تشکیل دینے کا حکم

اسلام آباد: اسلام آباد ہائی کورٹ نے سابق صدر آصف علی زرداری کی طبی بنیادوں پر ضمانت کی درخواست پر آصف علی زرداری کے لیے میڈیکل بورڈ کی تشکیل کا حکم دے دیا ہے۔

اسلام آباد ہائی کورٹ میں 8 ارب روپے کی مشکوک ٹرانزیکشن میں آصف زرداری کی ضمانت قبل از گرفتاری کی درخواست پر سماعت ہوئی۔ جسٹس عامر فاروق اور جسٹس محسن اختر کیانی نے سماعت کی۔

سابق صدر کی جانب سے وکیل فاروق ایچ نائیک جبکہ نیب سے سردار مظفر عباسی عدالت میں پیش ہوئے۔

فاروق ایچ نائیک نے عدالت میں کہا کہ ہم نے میڈیکل گروانڈ پر درخواست دائر کر رکھی ہے، اسی عدالت نے سابق صدر کو میڈیکل گراؤنڈ پر دو کیسسز میں ضمانت دی ہوئی ہے۔ عدالتی احکامات پر پہلے بھی میڈیکل بورڈ بنا تھا۔ اس وقت بھی سابق صدر آصف علی زرداری بیمار ہیں اور اسپتال میں داخل ہیں۔

جسٹس عامر فاروق نے ریمارکس دیئے کہ مناسب ہوگا کہ اس کیس میں بھی میڈیکل بورڈ تشکیل دیا جائے۔ فاروق ایچ نائیک نے کہا کہ سابق صدر آصف علی کو فی الحال دل، سینہ، شوگر سمیت دیگر بیماریاں لاحق ہیں۔ اس وقت نجی اسپتال میں آصف زرداری زیر علاج ہے۔ آصف زرداری کی نئی میڈکل رپورٹس بھی عدالت میں جمع کرائیں گئیں۔

اسلام آباد ہائی کورٹ نے ڈاکٹر ندیم ڈائریکٹر این آئی بی ٹی سی کو آصف علی زرداری کے لیے میڈیکل بورڈ بنانے کا حکم دے دیا۔

عدالت نے ضیاء الدین اسپتال کے ایم ایس کو بورڈ میں رکھنے اور دو ہفتوں میں میڈیکل بورڈ کو رپورٹس جمع کرنے کی ہدایت کی۔ آصف زرداری کی ضمانت قبل از گرفتاری کیس میں حاضری سے استثنیٰ کی درخواست منظور کرلی گئی۔

جسٹس عامر فاروق نے ریمارکس دیئے کہ بورڈ کی رائے آنے دے پھر ہی کوئی فیصلہ کریں گے۔ ڈپٹی پراسکیوٹر نیب نے کہا کہ کراچی کے کسی سرکاری اسپتال سے بورڈ بنائے تو ہمیں کوئی اعتراض نہیں۔

جسٹس عامر فاروق نے کہا کہ عورتوں کا ڈاکٹر دل کی بیماری نہیں دیکھ سکتا، بیماری سے متعلق ایکسپرٹس کی ضرورت ہے۔ عدالت نے کیس کی سماعت 28 جنوری تک کے لئے ملتوی کردی۔

یہ بھی پڑھیں

کشکول توڑنےکے دعوے، 2سال میں 5ارب ڈالرز، 4.5ٹریلین روپے قرضہ لیا گیا

2018 ء سے 2020 ء کے دوران حکومت نے قومی مالیاتی اداروں سے 4.5 ٹریلین …