وفاقی کابینہ اجلاس میں وزیراعظم عمران خان وزراء کی کارکردگی سے ناخوش

اسلام آباد ( آن لائن)وفاقی کابینہ نے آڈیٹر جنرل آف پاکستان کے اختیارات سے متعلق بل کی اصولی منظوری دے دی ہے جبکہ ہائی سپیڈ ڈیزل کو عام ٹینڈرنگ کے ذریعے ٹیکس اور ڈیوٹیز سے استثنیٰ دینے کی منظوری بھی دیدی ہے۔

وفاقی کابینہ کا اجلاس وزیر اعظم عمران خان کی زیر صدارت یہاں وزیر اعظم ہائوس میں ہوا ۔اجلاس میں ایف آئی اے کمرشل بینکنگ سرکل لاہور کو پولیس سٹیشن ڈیکلیئر کرنے کی منظوری دے دی ہے،کابینہ اجلاس میں نوشہرہ میں کثیرالمنزلہ عمارت کی تعمیر سے متعلق چار رکنی کمیٹی قائم کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے جبکہ قرضوں کے علاوہ بیرونی فنڈز سے متعلق بریفنگ موخرکر دی گئی ہے ،وفاقی کابینہ نے لیگل اینڈ جسٹس ایڈ اتھارٹی کے ڈائریکٹر جنرل ،نیشنل طب کونسل کے نئے ایڈمنسٹریٹر ، پاکستان کونسل فار سائنس و ٹیکنالوجی کے بورڈ آف گورنرز کی تعیناتی کی منظوری دیدی گئی ہے۔

اجلاس میں کابینہ کمیٹی برائے ادارہ جاتی اصلاحات کے گزشتہ دور اجلاسوں کے فیصلوں اوراقتصادی رابطہ کمیٹی اور کابینہ کمیٹی برائے نجکاری کے اجلاسوں کے فیصلوں کی بھی توثیق کی گئی ہے۔اجلاس میں ملک بھر میں بجلی کا بریک ڈائون،اسلام آباد میں اسامہ ستی کا قتل ،براڈ شیٹ کا معاملہ سمیت الیکشن کمیشن کے باہر اپوزیشن کے احتجاج پر بھی بحث کی گئی ۔

وفاقی وزیر توانائی عمر ایوب نے ملک گیر بریک ڈائون کو انسانی غلطی قرار دیتے ہوئے ابتدائی رپورٹ کابینہ میں پیش کر دی اس دوران وزیر اعظم اور وزراء نے عمر ایوب سے سخت سوالات کئے تاہم وفاقی وزیر نے کابینہ کو تفصیلی بریفنگ سے مطمئن کیا ۔کابینہ کے اجلاس میں وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں اسامہ ستی قتل کیس بارے بھی بھی بحث کی گئی ،کابینہ ارکان نے رائے دی کہ اسامہ ستی کے لواحقین جس طرح کی چاہیں تحقیقات کرائیں۔

وزیر اعظم عمران خان نے اسامہ ستی کی تحقیقات سے متعلق حکام کو تعاون کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ لواحقین ہائیکورٹ سے انکوائری کرانا چاہتے ہیں تو تعاون کریں، اسامہ ستی واقع کی تحقیقات کے بعد سخت سزا ہوگی۔یہ ایک افسوسناک واقعہ ہے، کیس میں انصاف ہوگا، اسامہ ستی واقعے کو مثالی بنائیں گے۔

وزیراعظم نے شفاف انکوائری اور تحقیقات کیلئے وزیر داخلہ شیخ رشید کو ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ تمام پہلوئوں پر نظر رکھیں کہیں بھی کوئی گڑبڑ نہیں ہونی چاہیے،کابینہ اجلاس میں براڈشیٹ معاملے پر وزیر اعظم نے کہا کہ معاملے پر حقائق سے قوم کو آگاہ کیا جائے ،قوم کو بتائیں کہ براڈشیٹ کو انہوں نے کیسے خریدنے کی کوشش کی،وزیر اطلاعات و نشریات سینیٹر شبلی فراز کو اس حوالے سے ٹاسک سونپ دیا گیا ہے ۔

کابینہ کے اجلاس میں پی ڈی ایم کے الیکشن کمیشن کے باہر آئندہ ہونے والے احتجاج پر بھی بحث کی گئی اور اس حوالے سے مزید فیصلے کیلئے آئندہ آنے والے مشاورتی اجلاسوں میں کیا جائیگا۔

یہ بھی پڑھیں

وزیراعظم عمران خان سے گورنر خیبر پختونخوا شاہ فرمان کی ملاقات

اسلام آباد (این این آئی) وزیراعظم عمران خان سے گورنر خیبر پختونخواہ شاہ فرمان نے …