قومی اسمبلی،حلیم عادل کی گرفتاری کیخلاف اپوزیشن اور حکومتی اراکین آمنے سامنے

حکومتی اراکین نے پیپلز پارٹی کے خلاف ڈاکو اور قاتل کے نعرے لگاتے ہوئے ایجنڈے کی کاپیاں پھاڑ دیں، شدید نعرہ بازی

اسلام آباد (این این آئی)قومی اسمبلی میں صوبائی اپوزیشن لیڈر حلیم عادل شیخ کی گرفتاری کے خلاف اپوزیشن اور حکومتی اراکین آمنے سامنے آگئے، حکومتی اراکین نے پیپلز پارٹی کے خلاف ڈاکو اور قاتل کے نعرے لگاتے ہوئے ایجنڈے کی کاپیاں پھاڑ دیں

حکومتی اور پیپلز پارٹی کے اراکین کی جانب سے ایک دوسرے کے خلاف نعرے بازی کے باعث ایوان مچھلی منڈی کا منظر پیش کر نے لگا ،سپیکر نے اجلاس منگل کی شام چار بجے تک ملتوی کر دیا ۔

قومی اسمبلی میں حلیم عادل کی گرفتاری کے خلاف حکومتی ارکان نے احتجاج کیا جس پر پیپلز پارٹی کی رکن اسمبلی شازیہ مری نے کہاکہ قومی اسمبلی کا اپوزیشن لیڈر بھی گرفتار ہے جس بعد حکومتی ارکان کے شور پر اسپیکر برہم ہوگئے اور کہاکہ مجھے ایجنڈا چلانے دیں، نکتہ اعتراض پر بات کرنے کا موقع دوں گا تاہم حکومتی اراکین کی جانب سے حلیم عادل شیخ کی گرفتاری کے خلاف پیپلز پارٹی کے خلاف نعرے بازی کا سلسلہ مزید تیز کرتے ہوئے ایجنڈے کی کاپیاں پھاڑ دیں۔

فہیم خان نے کہاکہ یہ قاتل کے بچے سانپ چھوڑ تے ہیں اس دور ان کراچی سے تعلق رکھنے والے حکومتی ارکان آغا رفیع اللہ کی نشست پر پہنچے اور حکومتی ارکان کے جواب میں نعرے بازی شروع کردی ،دوبدو نعرے بازی کے سبب ایوان مچھلی منڈی کا منظر پیش کر نے لگا ،کراچی کے ارکان نے آغا رفیع اللہ کو طیش دلانے کیلئے دھکے دیئے جس کے بعد آغا رفیع اللہ نے کورم کی نشاندھی کردی،دھکم پیل کے دوران مولانا عبدالاکبر چترالی اور علی محمد خان کی بیچ بچاؤ کرانے کی کوششیں کراتے رہے ،

اسپیکر کی جانب سے گنتی کے اعلان کے بعد ارکان کا شور جاری رہاجس کے بعد اسپیکر نے قومی اسمبلی کا آجلاس منگل کی شام چار بجے تک ملتوی کردیا۔

یہ بھی پڑھیں

ن لیگ کا الیکشن کمیشن سے وزیراعظم اور عثمان بزدار کیخلاف کارروائی کا مطالبہ

اسلام آباد (این این آئی)پاکستان مسلم لیگ (ن) کی ترجمان مریم اورنگزیب نے الیکشن کمیشن …