پاکستان سٹاک مارکیٹ میں تیزی کا رجحان برقرار

سرمایہ کاری مالیت ایک کھرب52ارب65کروڑ38لاکھ روپے بڑھ گئی

کراچی (این این آئی) پاکستان اسٹاک مارکیٹ میںجمعرات کو بھی تیزی کا رجحان برقراررہا اورسرمایہ کاروں کی جانب سے منافع بخش کمپنیوں کے شیئرز کی خریداری بڑھنے کے باعث کے ایس ای100انڈیکس کی34ہزار کی نفسیاتی حد بحال ہوگئی اور انڈیکس952.80پوائنٹس کے اضافے سے34111.64پوائنٹس کی سطح پر پہنچ گیاجب کہ77.38فیصد کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میں اضافہ ریکارڈ کیا گیا جس کے نتیجے میں مارکیٹ کی سرمایہ کاری مالیت ایک کھرب52ارب65کروڑ38لاکھ روپے بڑھ گئی اور کاروباری حجم بھی بدھ کی نسبت107.92فیصد زائد رہا ۔

پاکستان اسٹاک ایکس چینج میںمسلسل تیسرے روز جمعرات کو سرمایہ کاروں کی جانب سے شیئرز خریدنے کا رجحان برقرار رہا جس کے باعث تیزی دیکھنے میں آئی اور دوران ٹریڈنگ کے ایس ای 100انڈیکس کی34ہزار کی نفسیاتی حد بھی بحال ہوگئی تیزی کا رجحان آخر تک برقرار رہااور مارکیٹ کے اختتام پرکے ایس ای100انڈیکس 952.80پوائنٹس کے اضافے سے 34111.64پوائنٹس ہوگیا اسی طرح505.22پوائنٹس کے اضافے سے کے ایس ای30انڈیکس 15081.82پوائنٹس اور کے ایس ای آل شیئر انڈیکس 574.58پوائنٹس کے اضافے سے23937.61پوائنٹس پر بند ہوا ۔گزشتہ روز مجموعی طور پر367کمپنیوں کے حصص کا کاروبار ہوا جن میں سے284کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میں اضافہ ہوا جب کہ 73کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میں کمی اور10میں استحکام رہا ۔

تیزی کے باعث مارکیٹ کی سرمایہ کاری مالیت ایک کھرب52ارب65کروڑ38لاکھ روپے کے اضافے سے 63کھرب76ارب 71کروڑ72لاکھ روپے ہوگئی ۔جمعرات کو 29کروڑ20لاکھ 86ہزار شیئرز کا کاروبار ہوا جوبدھ کی نسبت15 کروڑ16لاکھ 12ہزار شیئرز زائد ہے۔قیمتوں میں اتار چڑھاو ٗ کے لحاظ سے کولگیٹ پامولو کے حصص کی قیمت150.75روپے کے اضافے سے2160.75روپے اوررفحان میظ کے حصص کی قیمت150وپے کے اضافے سے 6950روپے ہوگئی جب کہ پاک ٹوبیکو کے حصص کی قیمت 44روپے کے اضافے سے 1620روپے اورفلپ موریس کے حصص کی قیمت35روپے کی کمی سے 1802روپے ہوگئی ۔نمایاں کاروباری سرگرمیوں کے لحاظ سے ہیسکول پٹرول،پاک ا لیکٹران، میپل لیف ،پاک پٹرولیم ،یونٹی فوڈز،اینگرو فرٹیلائزر،کے الیکٹرک ،بینک آف پنجاب،آئل اینڈ گیس ڈیولپمنٹ اورپایونیئر سیمنٹ کے حصص سرفہرست رہے ۔

یہ بھی پڑھیں

پنجاب حکومت کا صوبے میں لاک ڈاؤن میں سختی کرنے کا فیصلہ

کوئٹہ : پنجاب حکومت نے صوبے میں لاک ڈاؤن میں سختی کرنے کا فیصلہ کرلیا …