گیلانی کی کامیابی کے بعد عمران خان وزیر اعظم نہیں رہیں گے،زرداری

سابق صدر مملکت، نواز اور مولانا کے مابین رابطوں کا سلسلہ جاری، سینیٹ الیکشن میں یوسف رضا گیلانی کی کامیابی کیلئے پیش رفت کا جائزہ

اسلام آباد( آن لائن )پی ڈی ایم کے مشترکہ امیدوار یوسف رضا گیلانی کو کامیاب کروانے کیلئے پی ڈی ایم کے تین بڑوں نے محاذ سنبھال لیا ہے ، سابق صدر آصف علی زرداری نے دعویٰ کیا ہے کہ یوسف رضا گیلانی کی اسلام آباد سے کامیابی کے بعد عمران خان وزیراعظم نہیں رہے گا۔

ذرائع کے مطابق پاکستان ڈیموکریٹک مومنٹ کے مشترکہ امیدوار سید یوسف رضا گیلانی کو جتوانے کیلئے پی ڈی ایم کے تین بڑ ے رہنمانواز شریف ، آصف علی زرداری ، مولانا فضل الرحمن نے محاذ سنبھال لیا ہے اس حوالے سے سابق صدر آصف زرداری نے مخدوم احمد محمود،قمر زمان کائرہ و دیگر سے رابطے شروع کردیئے ہیں, پنجاب سے پی ٹی آئی کے ناراض ایم این ایز سے رابطوں اور ملاقات کی ہدایت کی ہے ساتھ ہی سابق صدر آصف علی زرداری نے یہ دعویٰ کیا ہے کہ اگر یوسف ر ضا گیلانی اسلام آبا د سے کامیا ب ہو جاتے ہیں تو عمران خان وزیر اعظم نہیں رہیں گے

ادھر سابق وزیراعظم نوازشریف نے شاہد خاقان عباسی رانا ثناء اللہ اور مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز سے رابطہ کیا ہے اور انہیں یہ ہدایت کی ہے وہ ن لیگ کے تمام ایم این ایز کا جلد اجلاس بلائیں جبکہ یوسف رضا گیلانی کی کامیابی کیلئے مخالفین سے بھی ووٹ مانگیں۔

خیبر پختونخوا اور بلوچستان سے ایم این ایز کے ووٹ کیلئے مولانا فضل الرحمان اور محمود اچکزئی بھی متحر ک ہو گئے ہیں،ذرائع کے مطابق صدر آصف زرداری ،نواز شریف اور مولانا فضل الرحمن کے درمیان روزانہ کی بنیادپر رابطے ہو رہے ہیں، اور گیلانی کی کامیابی کے لئے پیشرفت ہو رہی ہے اس کا تفصیلی جائزہ لیا جارہا ہے، تینوں رہنمائوں کا موقف ہے کہ اگر پی ڈی ایم یوسف رضا گیلانی کی سیٹ نکالنے میں کامیاب ہوگئی تو قومی اسمبلی میں وزیر اعظم عمران خان کے خلاف عدم اعتماد کی تحریک لائی جائے گی اور اسی وجہ سے تینوں رہنما ساری صورت حال کو مانیٹر کررہے ہیں اور تینوں کا توجہ کا مرکز وفاقی حکومت کی نشست ہے

یوسف رضا گیلانی اور حفیظ شیخ کے درمیان سخت مقابلہ متوقع ہے اور آصف زرداری نے دعوی کیا ہے کہ وہ 20 سے25 ایم این اے گیلانی کو ووٹ کاسٹ کریںگے جو ا ن کی کامیابی کیلئے اہم کردار ادا کریں گے ۔

یہ بھی پڑھیں

الیکشن ریفارمز نہ ہوئیں توعام انتخابات میں زیادہ ’’ دھند‘‘ پڑسکتی ہے،سراج الحق

ضمنی انتخابات میں ’’دھند ‘‘کی وجہ سے نتائج موخر ہونے جیسے حربے گزشتہ 73 سال …