اداروں کا احترام دل سے ہوتا ہے،زبردستی نہیں کروایا جاسکتا،خاقان عباسی

کراچی(این این آئی)پاکستان مسلم لیگ(ن) کے سینئرنائب صدراور سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کہاہے کہ اداروں کا احترام دل سے ہوتا ہے، قانون کے ذریعے زبردستی نہیں کروایا جاسکتا ہے، مسلح افواج کا دل سے احترام کرتے ہیں تاہم کیا قانون بنا کر مسلح افواج کی عزت برقرار رکھنی چاہیے،،اس وقت حکومت نام کی کوئی چیز نہیں، جب تک ملکی نظام آئین کے تحت نہیں چلے گا ملک ترقی نہیں کرسکتا، جہانگیرترین کی طرف نہیں دیکھ رہے اور یہ اِن کے گھر کا معاملہ ہے، حکومت پہلے دن سے گری ہوئی ہے اورحکومت نہیں بلکہ نظام تبدیل کرنا ہوگا، کوئی بھی تحریک اصولوں کے بغیر نہیں چل سکتی۔ہفتہ کوکراچی کی احتساب عدالت میں پیشی کے بعد میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ 2 سال سے کیس چل رہا ہے لیکن ہمیں بھی نہیں معلوم کہ کیس کیا ہے۔ نیب سیاسی انجینئرنگ کا ادارہ ہے۔

انھوں نے کہا کہ ججز، بیوروکریسی، بزنس کمیونٹی کیلئے بھی بل لے آئیں، ایک ادارے کیلئے ایسا قانون نہیں بننا چاہیے جو ماضی میں غلط استعمال ہو۔پی ٹی آئی رہنما جہانگیرترین سے متعلق شاہد خاقان نے کہا کہ جہانگیر ترین کے ساتھ حکومت کے 40 رہنمائوں نے کھانا کھایا اورحکومتی ایم این اے،ایم پی ایز نے حکومت پرعدم اعتماد کا اظہار کیا۔حکومتی لوگ ہی اپنی حکومت پرتنقید کررہے ہیں۔جہانگیرترین خود کہہ رہے ہیں کہ انہیں بھی نہیں معلوم کیس کیا ہے۔

جہانگیرترین خود کہہ رہے ہیں کہ مجھے دبانے کیلئے کیس بنائے جارہے ہیں اورجہانگیرترین پرجومقدمات بننے کی نوعیت دیکھ لیں۔ شاہدخاقان نے کہا کہ جہانگیر ترین پر بنے مقدمات میں چینی کاکوئی کیس نہیں اور یہ سب سیاسی کیسز ہیں۔سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ عمران خان کی کرسی جہانگیر ترین کیہاتھ میں ہے، جہانگیر ترین کے عشائیے میں چالیس ارکان اسمبلی کی شرکت حکومت کے خلاف عدم اعتماد ہے۔

یہ بھی پڑھیں

پی ٹی آئی کی نااہل حکومت کا دور ختم ہونے والا ہے’امیر مقام

صوابی ( محمد شعیب سے) پاکستان مسلم لیگ ن خیبر پختونخوا کے صدر اور سابق …