مساجد و مدارس کی حفاظت سے پیچھے نہیں ہٹیں گے،مشتاق احمد خان

حکومت نے ایف اے ٹی ایف کی خوشنودی کیلئے 12 بل پاس کئے لیکن وہاں سے گرے لسٹ سے نکالنے کی بجائے ڈو مور کا مطالبہ آگیا

شیرگڑھ(نمائندہ شہباز)امیر جماعت اسلامی خیبرپختونخوا سینیٹر مشتاق احمد خان نے کہا ہے کہ رسول اللہ کی امت محکوم اور کمزور ہے، قرآن کی حرمت اور ناموس رسالت محفوظ نہیں، کشمیر، مسجد اقصیٰ اور فلسیطن میں امت ظلم کا شکار ہے۔ عالم اسلام کے حکمران بے اختیار ہیں، ان کا اختیار عالم کفر کے پاس ہے، دنیا کی 24 فیصد آبادی، 19 فیصد رقبہ اور 70 فیصد قدرتی دولت رکھنے کے باجود امت مسلمہ کی صورتحال خراب ہے۔ 64 فیصد نوجوان ہیں جوزرخیز دماغ رکھتے ہیں لیکن اس کے باوجود ترقی اور خوشحالی سے دور ہیں، ایسی ترقی اور خوشحالی جو ہمیں کفر کے دستبرد سے بچا سکے۔ مسلمانوں کی حالت زار قرآن و سنت سے دوری ہے اور امت کے حکمران ہیں۔ مساجد و مدارس اسلام کے قلعے ہیں۔

ایف اے ٹی ایف کی غلامی میں پاس کیا گیا وقف پراپرٹی بل مساجد و مدارس کا دشمن ہے۔ حکومت نے ایف اے ٹی ایف کی خوشنودی کے لئے 12 بل پاس کئے لیکن وہاں سے گرے لسٹ سے نکالنے کی بجائے ڈو مور کا مطالبہ آگیا۔ اس وقت 73 کروڑ مسلمان ان پڑھ ہیں، جسے لکھنا پڑھنا نہ آتا ہو وہ قرآن و حدیث سے کیا رہنمائی لیں گے۔ حکمرانوں نے قصداً رسول اللہ کی امت کو علم و تحقیق سے دور رکھا ہے، وہ نہیں چاہتے کہ مسلمان کفار کی غلامی سے آزاد ہوں۔

گھروں کو قرآن کے مراکز بنانے کی ضرورت ہے۔ مساجد و مدارس کی حفاظت سے پیچھے نہیں ہٹیں گے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے جامعہ مفتاح العلوم ہشتنغرو کلے شیر گڑھ ضلع مردان میں تقریب دستار فضیلت و ختم بخاری سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر جماعت اسلامی خیبرپختونخوا کے سیکرٹری جنرل عبدالواسع، جامعہ مفتاح العلوم کے مہتمم مولانا عبدالبر، مولانا صفی اللہ، جماعت اسلامی قلع مردان کے امیر غلام رسول اور سابق ضلعی امیر مولانا سلطان محمد نے بھی خطاب کیا۔

جامعہ مفتاح العلوم شیر گڑھ میں فارغ ہونے والے فضلاء میں 65 طلبہ، 13 مفتیان عظام اور 28 طالبات شامل ہیں۔ اس موقع پر فراغت پانے والے طلباء و طالبات میں اسناد بھی تقسیم کی گئیں۔ سینیٹر مشتاق احمد خان نے مزید کہا کہ حکومت نے فرانس کے سفیر کو ابھی تک ملک بدر نہیں کیا۔ فرانس نے پاکستان کو ایف اے ٹی ایف کی گرے لسٹ میں ڈلوایا، حکومتی سرپرستی میں رسول اللہ کی توہین کی، لیکن مدینہ کی ریاست کے دعویداروں نے شان رسالت پر معمولی سی غیرت بھی نہ دکھائی۔

انہوں نے کہا کہ 90 فیصد قوانین ایف اے ٹی ایف کے مانے گئے لیکن اس کے باوجود پاکستان کو وائٹ لسٹ میں شامل نہیں کیا گیا۔ فرانس کی وزارت داخلہ نے وقف پراپرٹی بل بنایا ہے۔ یہ غلامی کی بدترین مثال ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں دنیا بھر سے طالبعلم علوم نبوت اور قرآن و سنت کے تحقیقی علم کے لئے آتے ہیں۔ مساجد کی میناریں قائم رہیں گی،

انہوں نے کہا کہ مسجد اقصیٰ ارض الانبیاء اور رسول اللہ کی امانت ہے، کچھ مسلم ممالک نے اسرائیل کو تسلیم کرلیا ہے، پاکستان پر بھی دباؤ ہے، جن ممالک نے اسرائیل کو تسلیم کیا انہوں نے مان لیا کہ وہ مسجد اقصیٰ اور فلسطین سے دستبردار ہوگئے ہیں۔ کسی کو بھی مسجد اقصیٰ سے دستبردار ہونے کی اجازت نہیں، مسجد اقصیٰ کی آزادی کی جنگ جاری رکھیں گے اور اس کی ایک انچ زمین سے بھی دستبردار نہیں ہوں گے۔

یہ بھی پڑھیں

عوام مزید تبدیلی کے جھانسے میں آنے والے نہیں، غلام بلور

پشاور(وقائع نگار)عوامی نیشنل پارٹی کے بزرگ رہنما اور سابق وفاقی وزیر حاجی غلام احمد بلور …