پشاور میں میرانشاہ کے تاجروں کادھرنا جاری، بنی گالہ کے سامنے احتجاج کی دھمکی

 ہمارے نقصانات کا جلد ازالہ کیا جائے،گزشتہ چار روز سے بیٹھے ہیں تاحال کسی حکومتی عہدیدار نہ ہی وزیرستان کے ایم پی ایز نے رابطہ کیا،صوبائی حکومت نے مسائل حل نہ کئے تو بنی گالہ میں خیمہ بستی قائم کریں گے، مظاہرین

پشاور(سٹی رپورٹر)صوبائی دارالحکومت پشاور میں ہفتہ کے روز شمالی وزیرستان کے رہائشیوںکا مسلسل تیسرے روز بھی احتجاجی مظاہرہ جاری رہا جس کی قیادت ترجمان ایگزیکٹیو کمیٹی عبد الجلیل نے کی

مظاہرے میں جمال الدین ،ڈاکٹر عمران ،سیف اللہ ،زانگ گل نے اپنے ساتھیو ں سمیت کثیر تعداد میں شرکت کی ۔مظاہرین نے آپریشن ضرب عضب کے دوران میران شاہ بازار کے نقصانات کے ازالے کا مطالبہ کرتے ہوئے حکومت کے خلاف نعرے بازی کی ۔

مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے عبد الجلیل وزیرنے کہا کے آپریشن ضرب عضب کے دوران میران شاہ بازار کو مکمل طور پر مسمار کر دیا گیا تھا ۔

انھو ں نے کہا کے جس کے بعد پشاور ہائی کورٹ میں اس سلسلے میں کیس کیا گیا تھا جو ہمارے حق میں فیصلہ کے ساتھ ساتھ ٹی او آر بنائی گئی جو دونو ں فریقین کے درمیان رابطہ رکھنے اور مسائل کے حل کا ذریعہ تھی جس میں یہ فیصلہ کیا گیا کہ فی مرلہ 45 لاکھ اور 3500 مربع سکوائر فٹ کا کہا گیا جو بعد میں اس وقت کے موجودہ ڈی سی نے 45کی جگہ 15 لاکھ اور مربع سکوئر فٹ کی جگہ فی دکان تین لاکھ دینے کا اعلان کیا جو ہم تمام افراد نے مشترکہ طور پر مسترد کر دیااور اس کے بعد عرصہ درازگزرنے کے بعد بھی کوئی عمل درآمد نہ ہونے کی صورت میں مجبوراًہم لوگ گزشتہ 45 دنو ں سے بنو ں اور اب تیسرے روز سے پشاور میں احتجاج پر مجبور ہوئے

انھو ں نے کہا کے بڑ ے افسو س کی بات ہے کہ اب تک ہم سے نہ کوئی حکومتی نمائندہ ملا اور نہ ہی وزیر ستان سے تعلق رکھنے والے ممبران صوبائی اسمبلی نے رابطہ کیا انھو ں نے کہا کہ ہمارا احتجاج لا محدود مدت تک جاری رہے گا اور اگر اس پر بھی کوئی شنوائی نہ ہوئی تو ہم بنی گالہ کے سامنے احتجاجی کیمپ لگائیں گے۔

یہ بھی پڑھیں

اٹھارہویں آئینی ترمیم سے چھوٹے صوبوں کا احساس محرومی ختم ہوا،اسفندیارولی خان

پشاور(نمائندہ خصوصی) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی صدر اسفندیارولی خان نے کہا ہے کہ اٹھارویں …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔