لاپتہ افراد کی بازیابی کیلئے اے این پی کے زیراہتمام ملک بھر میں احتجاجی مظاہرے

پشاور: عوامی نیشنل پارٹی کے زیر اہتمام لاپتہ افراد کی باحفاظت بازیابی کیلئے آج ملک بھر میں احتجاجی مظاہروں کا انقعاد کیا گیا ہے۔

صوبائی صدر خیبرپختونخوا ایمل ولی خان کی قیادت میں چارسدہ میں احتجاجی مظاہرہ کیا گیا جبکہ اے این پی بونیر کی ریلی کی قیادت اے این پی کے صوبائی جنرل سیکرٹری جنرل و صوبائی اسمبلی میں پارلیمانی لیڈر سردار حسین بابک نے کی۔

احتجاجی مظاہرے سے خطاب میں ایمل ولی خان کا کہنا تھا کہ وقت آپہنچا ہے کہ ملک کی سیاسی اور فوجی قیادت فیصلہ لیں کہ اس ملک کو قانون اور آئین کے تحت چلانا ہے یا چند مخصوص حلقوں کی ایما پر۔

احتجاجی مظاہرے سے اپنے خطاب میں سردار حسین بابک کا کہنا تھا کہ لاپتہ افراد کا مسئلہ پورے ملک کا مسئلہ ہے۔لوگوں کو جبری طور پر لاپتہ کرنا نہ غیر انسانی، غیر جمہوری، غیر آئینی اور غیر قانونی عمل ہے جو اے این پی کسی صورت برداشت نہیں کرسکتی۔

مرکزی اور صوبائی حکومتوں کو شدید تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے سردار حسین بابک نے کہا کہ اے این پی بلوچستان کے ترجمان اسد خان اچکزئی کئی مہینوں سے لاپتہ ہیں لیکن ریاست ان کی بازیابی میں ناکام رہی ہے۔ حکومت کا بنیادی فرض شہریوں کے جان ومال کی حفاظت کرنا ہوتی ہے لیکن تبدیلی سرکار میں عوام کی جان نہ مال محفوظ ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ لاپتہ افراد کے اہل خانہ کے درد کا احساس عوامی نیشنل پارٹی سے زیادہ کسی کو نہیں ہوسکتا کیونکہ دہشت گردی کیخلاف جنگ میں سب سے زیادہ قربانیاں اے این پی نے دی ہیں۔

اے این پی کی جانب سے جاری شیڈول کے مطابق مرکزی سینئر نائب صدر امیر حیدر خان ہوتی مردان میں ریلی کی قیادت کرینگے۔

صوبائی صدر سندھ شاہی سید کراچی اور صوبائی صدر بلوچستان اصغر اچکزئی کوئٹہ میں ریلیوں کی قیادت کرینگے۔

اسی طرح اے این پی پنجاب کے صدر منظور احمد خان اسلام آباد میں لاپتہ افراد کیلئے احتجاجی ریلی کی قیادت کرینگے جبکہ صوبائی جنرل سیکرٹری خیبرپختونخوا سردار بابک بونیر جبکہ صوبائی ترجمان خیبرپختونخوا ثمر ہارون بلور نوشہرہ میں ریلیوں کی قیادت کرینگے۔

یہ بھی پڑھیں

صوبائی کابینہ،لوکل گورنمنٹ الیکشنز رولز میں ضروری ترامیم کی منظوری

کابینہ نے کمیشن آن ویمن اسٹیٹس کے 11 نا ن آفیشل ممبران کی تعیناتی ، …