پشاور، بی آر ٹی ملازمین کا تنخواہوں میں کٹوتی کیخلاف احتجاج، بس سروس معطل

پشاور: پشاور میٹرو بس ملازمین کا تنخواہوں میں کٹوتی کیخلاف ہڑتال کردی جس کے باعث بی آر ٹی سروس معطل ہوگئی، بس سروس معطل ہونے کے باعث شہریوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔

احتجاجی ملازمین نے کہا کہ ہر مہینے رولز کی خلاف ورزی کے نام پر تنخواہ تین سے 4 ہزار روپے کاٹ دئے جاتے ہیں یہ کہاں کا انصاف ہیں۔

ملازمین نے احتجاجا” تمام بی آر ٹی سٹیشنز کو بند کردیا جس کے باعث روٹ پر تمام بسیں رک گئیں تو مسافروں کو بھی مشکلات کا سامنا کرنا پڑا اور وہ بسوں سے اتر کر پیدل چلنے پر مجبور ہوگئے۔

پشاور بی آر ٹی چلانے والی سرکاری کمپنی ٹرانس پشاور کے ترجمان نے کہا ہے کہ بس آپریشنز، ٹکٹنگ، صفائی و دیکھ بھال اور سیکیورٹی کی خدمات قانونی قوائد وضوابط کے مطابق نجی کمپنیوں کو سونپی گئی ہیں جو کہ بی آر ٹی پراجیکٹ کے لئے ملازمین رکھنے، ان کی تنخواہوں اور دیگر معملات کی ذمہ دار ہے۔ ان ملازمین سے ٹرانس پشاور کا براہ راست تعلق نہیں۔

ترجمان کا کہنا ہے کہ نجی کمپنی ملازمین کی جانب سے ملازمین کے تمام تحفظات دور کرنے کی یقنی دہانی کرائی گئی جس کے نتیجے میں ملازمین کی جانب سے ہڑتال ختم کی گئی۔

انہوں نے کہا کہ بی آر ٹی کی جانب سے نجی کمپنیوں کے ساتھ کئے گئے معاہدوں میں کسی بھی قسم کی ہڑتال کی کوئی گنجائش نہیں۔ معاہدے کی خلاف ورزی پر سخت کاروائی کی جائے گی۔

یہ بھی پڑھیں

عوامی نیشنل پارٹی کل پشاورمیں سیاسی قوت کا مظاہرہ کرے گی

باچاخان اور ولی خان کی برسی تقاریب پورا ہفتہ، صد سالہ جشن سال بھر جاری …