اساتذہ کی استطاعت بڑھانے کیلئے توجہ دی جارہی ہے، کامران بنگش

جامعہ ہری پور کے 5 سائنسدانوں کے نام بین الاقوامی لسٹ میں آنا اعزاز ہے، معاون خصوصی

پشاور(سٹاف رپورٹر)وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا کے معاون خصوصی برائے اطلاعات و اعلیٰ تعلیم کامران بنگش نے کہا ہے کہ محکمہ اعلیٰ تعلیم صوبے میں اعلیٰ تعلیم کی بہتری کے لیے اساتذہ کرام کی استطاعت بڑھانے پر خصوصی توجہ دے رہی ہے تاکہ طلباء و طالبات کو چیلنجز سے نمٹنے کے لیے تربیت یافتہ و تہذیب یافتہ بنا کر مستقبل کے لیے تیار کیا جائے۔

یہ بھی پڑھیں: خیبرپختونخوا حکومت کا سرکاری سکولوں میں ڈبل شفٹس شروع کرنے کا فیصلہ

انہوں نے کہا کہ ہمارے لیکچررز، پروفیسرز اور طلباء و طالبات میں وہ استطاعت ہے جو کسی بھی ترقیافتہ ممالک کے تعلیم یافتہ کیڈر میں پایا جاتا ہے۔ حال ہی میں عبدالولی خان یونیورسٹی مردان، خوشحال خان خٹک یونیورسٹی کرک اور جامعہ ہری پور کے اساتذہ کرام نے عالمی سطح پر نام کمایا ہے۔

یہ بھی پڑھیں: خیبرپختونخواکے 11اضلاع میں لڑکیوں کے 114سکولز غیر فعال

ان خیالات کا اظہار معاون خصوصی نے ہائیر ایجوکیشن ریسرچ اینڈ ٹریننگ انسٹی ٹیوٹ پشاور میں دو آن لائن کورسز کے افتتاح کے موقع پر کیا۔

معاون وزیراعلیٰ کامران بنگش نے کہا کہ اساتذہ کی پیشہ ورانہ تربیت ترجیح ہے۔ ہمارے لیے جامعہ ہری پور کے 5 سائنسدانوں کے نام دنیا کے اعلیٰ سائنسدانوں کی لسٹ میں آنا اعزاز ہے۔

اس خبر کو بھی پڑھیں: ای ٹرانسفر پالیسی کے تحت اساتذہ کے تبادلوں میں میرٹ کو یقینی بنایا جائے، محمود خان

انہوں نے کہا کہ کالجز میں سٹاف کی کمی پوری کرنے کے لئے 1900 مزید لیکچررز بھرتی کر رہے ہیں۔

لیکچررز کی ٹرانسفر کے حوالے سے بات چیت کرتے ہوئے معاون خصوصی کامران بنگش نے کہا کہ لیکچررز کی ہموار و بلا تعطل تبادلے یقینی بنانے کے لیے پالیسی بنا رہے ہیں۔ جبکہ ہائیر ایجوکیشن کے فروغ کے لیے ریجنل لیول پر ڈائریکٹوریٹ بنا رہے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں

خیبر پختونخوا: بچوں سے زیادتی کرنے والوں کو سزائے موت کی سزا تجویز

پشاور: خیبر پختونخوا حکومت نے بچوں سے زیادتی کے واقعات کی روک تھام کیلئے ترمیمی …