حکومت اپنی ذمہ داری پوری کرنے میں ناکام ہوچکی ہے، سردار بابک

ایک عرصے سے پختونوں کو چن چن کر شہید کیا جارہا ہے، اے این پی نے ہمیشہ تشدد کے خلاف جنگ عدم تشدد کے مضبوط ہتھیار سے لڑی ہے


پشاور(سٹاف رپورٹر) عوامی نیشنل پارٹی خیبرپختونخوا کے جنرل سیکرٹری و پارلیمانی لیڈر سردارحسین بابک نے کہا ہے کہ آئین ہر شہری کے جان و مال کے تحفظ کی ضمانت دیتی ہے لیکن حکومت اپنی ذمہ داری ادا کرنے میں مکمل طور پر ناکام ہوچکی ہے۔

باچاخان مرکز پشاور میں اے این پی بلوچستان کے ترجمان اسدخان اچکزئی کی غائبانہ نماز جنازہ کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے سردارحسین بابک نے سوال اٹھایا کہ حکومت عدم تحفظ کے شکار عوام کو کیا پیغام دینا چاہتی ہے؟یہاں پر پختونوں کے ساتھ ہونیوالی زیادتی اور انکی جاری نسل کُشی کو سمجھ چکے ہیں۔ ایک عرصے سے پختونوں کو چن چن کر شہید کیا جارہا ہے۔

اے این پی نے ہمیشہ سے تشدد کے خلاف جنگ عدم تشدد کے مضبوط ہتھیار سے لڑی ہے۔ سردارحسین بابک نے کہا کہ آئندہ بھی امن کے قیام کیلئے باچاخان کے دیے گئے فلسفہ عدم تشدد پر کاربند رہتے ہوئے پختونوں کی بقا اور حقوق کی جنگ لڑتے رہیں گے۔

انہوں نے مطالبہ کیا کہ حکومت وضاحت کریں کہ آئے روز اغواء برائے تاوان اور مسخ شدہ لاشیں پھینکنے والے کیا اتنے طاقتور ہیں کہ حکومت انکے آگے سر نہیں اٹھاسکتے؟ پختونوں میں احساس محرومی بڑھتی جارہی ہے۔ ایک طرف پختونوں کا قتل عام جاری ہے اور دوسری طرف انہیں آئینی حقوق سے محروم رکھ کر انہیں فاقوں پر مجبور کیا جارہا ہے۔ پختونوں کے جان و مال کے تحفظ کو یقینی بنانے کیلئے حکومت نے کون سے اقدامات اٹھائے ہیں؟ پختون اپنے پیاروں کے جنازے اٹھا اٹھا کر تھک چکے ہیں۔

پختونوں کو یہ معلوم نہ ہوسکا کہ انہیں کون اور کس جرم میں قتل کئے جارہے ہیں۔ انہوں نے انسانی حقوق کی ملکی و بین الاقوامی تنظیموں پر زور دیا کہ وہ پختونوں کے ساتھ ہونیوالی زیادتی پر خاموشی توڑ دیں اور اپنی پیشہ وارانہ ذمہ داریوں کا احساس کرتے ہوئے پختونوں کی آواز دنیا تک پہنچائے۔ انہوں نے مزید کہا کہ پختونوں کو متحد اور بیدار ہونا پڑے گا۔ تمام پختونوں کو یک آواز ہو کر پختونوں کے خلاف ایک نہ ختم ہونیوالے سلسلے کو بند کرنا چاہئیے۔

یہ بھی پڑھیں

ترقیاتی فنڈز کی 100 فیصد یوٹیلائزیشن کو یقینی بنایا جائے،وزیراعلیٰ

پشاور(نیوز رپورٹر)وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا محمود خان نے متعلقہ حکام کو ہدایت کی ہے کہ …