پولیس اصلاحات کا عمل مسلسل تیزی سے آگے بڑھ رہا ہے، ثناء اللہ عباسی

پشاور(کرائمز رپورٹر)انسپکٹر جنرل آف پولیس خیبر پختونخوا ڈاکٹر ثناء اللہ عباسی نے کہا ہے کہ خیبر پختونخوا پولیس نے صوبے کو پولیو فری بنانے کا پکا عزم کر رکھا ہے اور اْمید ظاہر کہ بہت جلد پاکستان کا شمار پولیو فری ملکوں میں سے ہوگا۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے کنٹونمنٹ بورڈ ہسپتال پشاور کینٹ میں جاری پولیو مہم کے دوران بچوں کو پولیو کے قطرے پلاتے ہوئے کیا۔ چیف کیپٹل سٹی پولیس پشاور، ایس ایس پی پشاور اور ایس ایس پی ٹریفک پشاور بھی اس موقع پر آئی جی پی کے ہمراہ تھے۔ آئی جی پی نے پشاور میںجاری پولیو مہم کے لیے اْٹھائے گئے سیکیورٹی اقدامات کا جائیزہ بھی لیا ۔

اس موقع پر میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے آئی جی پی کا کہنا تھا کہ پیشہ ورانہ فرائض کی ادائیگی کے دوران قیمتی جانوں کا نذرانہ پیش کرنا خیبر پختونخوا پولیس کی کمٹمنٹ کی عکاسی کرتا ہے۔ پولیو مہم کے دوران پولیس ٹیموں پر پہلے بھی حملوں میں پولیس کی شہادتیں ہوئی ہیں آج بھی ضلع کرک تخت نصرتی کے علاقے گردی بانڈہ میں پولیس کانسٹیبل کی شہادت ہوئی ہے اور کہا کہ پہلے بھی حملوں میں ملوث ملزمان کو کیفر کردار تک پہنچایا ہے اور اس واقعے کے ملزمان بھی بہت جلد قانون کے کٹہرے میں ہونگے۔

آئی جی پی نے کہا کہ ہمارے پولیس جوان کی شہادت پولیس کی سکیورٹی انتظامات اور کمٹمنٹ کی آئینہ دار ہے اور اس کو ہم پولیس کی کامیابی سے تعبیر کرتے ہیں کہ پولیس نے خود شہادت پیش کی مگر پولیو ٹیم کو محفوظ رکھا۔ ایک سوال کے جواب میں آئی جی پی نے کہا کہ پولیس اصلاحات کا عمل مسلسل تیزی سے آگے بڑھ رہا ہے۔ پچھلے سال فرائض میں غفلت اور لاپرواہی پر 854 اہلکاروں کو برطرف کردیا گیا ہے۔ جبکہ اچھی اور بہترین کارکردگی پر اہلکاروں میں دو کروڑ کی رقم بطور انعام تقسیم کی گئی ہے۔

ایک اور سوال کے جواب میں آئی جی پی نے کہا کہ پولیس کی قربانیوں اور کاوشوں سے دہشت گردی، اسٹریٹ کرائمز اور دیگر جرائم پر قابو پالیا گیا ہے پولیس اپنی تئیں سخت کوششیں کررہی ہیں۔ ماضی کے مقابلے میں امن و آمان میں نمایاں بہترین آئی ہے۔

آئی جی پی ڈاکٹر ثناء اللہ عباسی نے میڈیا کے ایک اور سوال کے جواب میں کہا کہ ہم ایک ایسے معاشرے میں رہ رہے ہیں جہاں بہت سے لوگ عوام کے جذبات سے کھیلتے ہوئے حقیقت اور سچ کی بجائے جھوٹ کو پھیلا رہے ہیں۔ پرانے اور غیر متعلقہ ویڈیو کو چلا کر پولیس کو بدنام کرنے کی ناکام کوششیں ہو رہی ہیں۔ ہم بالخصوص عوام ، میڈیا اور باقی تمام اداروں کو جواب دہ ہیں اور عوام سے اپیل کی کہ وہ جھوٹ پھیلانے والوں کی خبروں پر کان نہ دھریں بلکہ سچ کے لیے اپنی پولیس اور دیگر فورسز کے ساتھ کھڑے ہو کر ان کی حوصلہ افزائی کریں۔قبل ازیں آئی جی پی نے ہسپتال میں پولیو مہم کے سلسلے میں کئی ایک بچوں کو پولیو کے قطرے پلائے۔

یہ بھی پڑھیں

ایچ ای سی جامعات کو درپیش مسائل کے حل میں اپنا کردار ادا کرے، محمود خان

وزیراعلیٰ سے چیئرمین ہائیر ایجوکیشن کمیشن کی ملاقات، صوبائی محکمہ اعلیٰ تعلیم اور ایچ ای …