صوابی، اے ٹی سی جج قاتلانہ حملے میں بیوی، بیٹی اور نواسے سمیت جاں بحق

صوابی /پشاور(نمائندہ شہبازنیوز رپورٹر)پشاور اسلام آباد موٹر وے پر صوابی انٹر چینج کے قریب گاڑی پر نامعلوم افراد کی فائرنگ سے انسداد دہشت گردی عدالت سوات کے جج جسٹس آفتاب آفریدی ، بیوی ، بیٹی اور نواسے سمیت جاں بحق ہو گئے، فائرنگ کے نتیجہ میں گن مین اور ڈرائیور شدید زخمی ہو گیا جنہیں ریسکیو1122صوابی نے فوری طور پر پشاور ہسپتال منتقل کر دیا،

چھوٹا لاہور پولیس کی رپورٹ کے مطابق جسٹس آفتاب آفریدی ولد غازی خان ساکن جان کلی مقصود آباد ملٹری فارم پجگی روڈ پشاور اتوار کی شام اپنے خاندان کے ہمراہ گاڑی میں پشاور سے اسلام آباد جارہے تھے جب ان کی گاڑی صوابی انٹر چینج کے قریب دریائے سندھ کے پل کے مقام پر پہنچی تو نامعلوم افراد نے ان کی گاڑی پر اندھا دھند فائرنگ شروع کی جس کے نتیجے میں جسٹس آفتاب آفریدی، ان کی اہلیہ بی بی زینب ، بیٹی کرن زوجہ عبد الماجد اور نواسہ محمد سنان ولد عبد الماجد موقع پر جاں بحق ہو گئے جب کہ فائرنگ سے مقتول کا ڈرائیور ذاکر اور گن مین دائود شدید زخمی ہو گئے ۔

اطلاع ملتے ہی ریسکیو1122کے 2 ایمبو لینس گاڑیاں اور میڈیکل ٹیم موقع پر پہنچ کر زخمیوں کو ابتدائی طبی امدا د دینے کے لئے باچا خان میڈیکل کمپلیکس شاہ منصور منتقل کر دیا جہاں سے انہیں علاج کے لئے پشاور منتقل کر دیا گیا جب کہ مقتولین کو پوسٹ مارٹم کے لئے بی ایم سی شاہ منصور منتقل کر دیا گیا مقتول جسٹس آفتاب آفریدی آج کل انسداد دہشت گردی سوات کی عدالت میں بحیثیت جج خدمات انجام دے رہے تھے چھوٹا لاہور پولیس نے نامعلوم افراد کے خلاف ایف آئی آر درج کر کے تفتیش شروع کر دی ہے۔

دوسری جانب گورنر خیبرپختونخوا شاہ فرمان اور وزیراعلیٰ محمود خان نے صوابی میں جج کی گاڑی پر فائرنگ کے واقعے کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے پولیس حکام کو واردات میں ملوث عناصر کو جلد از جلد گرفتار کا حکم دے دیا۔اپنے ایک بیان میں انہوں نے خواتین اور بچوں کو نشانہ بنانا ظالمانہ فعل ہے،بہیمانہ واقعے میں ملوث عناصر قانون کی گرفت سے نہیں بچ سکتے، متاثرہ خاندان کے دکھ میں برابر کے شریک ہیں، انہیں پورا انصاف دیا جائے گا۔

یہ بھی پڑھیں

کوہاٹ،دیرینہ دشمنی پر پی ٹی آئی رہنما ملک ریاض بیٹے سمیت قتل

کوہاٹ (نمائندہ شہباز)کوہاٹ میں پرانی دشمنی پر مخالفین نے فائرنگ کر کے باپ بیٹے کو …